Home / کاروبار / کھاد کی 56 ہزار بوریوں کے فروخت پر نیب سے جواب طلب

کھاد کی 56 ہزار بوریوں کے فروخت پر نیب سے جواب طلب

نیب نے انکوائری کرکے خورد برد خود کی، وکلا۔ فوٹو: فائل

نیب نے انکوائری کرکے خورد برد خود کی، وکلا۔ فوٹو: فائل

 کراچی:  سندھ ہائی کورٹ نے نیشنل فرٹیلائزر کارپوریشن کراچی سے کھاد کی 56 ہزار بوریوں کے فروخت سے متعلق نیب کی جانب سے جواب داخل نہ کرنے پر برہمی کا اظہار کرتے 7 فروری تک جواب طلب کرلیا۔

دو رکنی بینچ کے روبرو نیشنل فرٹیلائزر کارپوریشن کراچی سے کھاد کی 56 ہزار بوریاں فروخت کرنے سے متعلق سماعت ہوئی، نیب پنڈی کی جانب سے جواب جمع نہ کرانے پر عدالت برہم ہوگئی، عدالت نے7فروری کو نیب پنڈی سے جواب طلب کرلیا جب کہ عدالت نے ملزمان کی درخواستوں میں7 فروری تک توسیع کردی، واردات میں گل شیر احمد چاچڑ، امجد اقبال سمیت 3 ملزمان ملوث ہیں۔

ملزمان کے وکلا کے مطابق نیب کے تفتیشی افسر اور دیگر نے کھاد 2013 میں خود فروخت کی جب کہ فروخت کرنے کے بعد ڈرافٹ سابق چیئرمین نیب قمر الزمان چوہدری کے نام منتقل کردیا۔ نیب نے انکوائری کرکے خورد برد خود کی اور ہمارے موکلان کو پھنسا دیا، 9 کروڑ کی رقم نیب کے تفتیشی افسر اور دیگر نے مل کر سابق چیئرمین کو منتقل کی جب کہ ڈرافٹ نیشنل فرٹیلائزر کارپوریشن کے نام منتقل ہونا چاہیے تھا۔

About محمد ہارون عباس قمر

محمد ہارون عباس، صحافی، براڈکاسٹراورسافٹ وئر انجینئرپاکستان کے مانچسٹر فیصل آباد میں پیدا ہوئے۔ابتدائی تعلیم فیصل آباداوربراڈکاسٹنگ کی تعلیم ہلورسم اکیڈمی ، ہالینڈسے حاصل کی۔ کمپیوٹر میں تعلیم اسلام آباد، پاکستان سے حاصل کرنے کے ساتھ ساتھ، ریڈیائی صحافت سے وابستہ رہے ہیں۔اس حوالے سے پاکستان کے مختلف ٹی وی چینلزکے ساتھ ساتھ ریڈیو ایران،ریڈیو پاکستان سے ان کی وابستگی رہی۔ تعلیم اور صحافتی سرگرمیوں کے سلسلے میں وہ پاکستان کے مختلف شہروں کے علاوہ ایران، سری لنکا، نیپال، وسطی ایشیائی ریاستوں‌کے علاوہ مشرقی یوروپ کے مختلف ممالک کا سفر کر چکے ہیں۔مختلف اخبارات میں سماجی، سیاسی اور تکنیکی امور پر ان کے مضامین شائع ہوتے رہتے ہیں۔علاوہ ازیں اردو زبان کو کمپیوٹزاڈ شکل میں ڈھالنے میں ان کا بہت بڑا کردار ہے۔ محمد ہارون عباس ممتاز این جی اوز سے وابستہ رہے ہیں۔ جن میں جنوبی ایشیائی ممالک کی تنظیم ساوتھ ایشین سنٹر اور پاکستان کی غیر سرکاری تنظیموں کے نمائندہ فورم پاکستان این جی اوز فیڈرشین شامل ہیں۔ علاوہ ازیں پاکستان مسلم لیگ کے مرکزی میڈیا ونگ اسلام آباداور پاکستان کے پارلیمنٹرینز کی تنظیم پارلیمنٹرین کمشن فار ہیومین رائٹس میں بھی تکنیکی امور کے نگران رہے ۔وہ پاکستان کے سب سے بڑے نیوز گروپ جنگ گروپ آف نیوزپیپرز، پاکستان کے اردو زبان کے فروغ کے لئے قائم کئے گئے ادارے مقتدرہ قومی زبان ، پاکستان کے سب سے بڑے صنعتی گروپ دیوان گروپ آف کمپنیز کو تکنیکی خدمات فراہم کرتے رہے ہیں۔ محمد ہارون عباس القمر آن لائن کے انتظامی اور تکنیکی امور کے نگران ہیں۔ اس کے ساتھ ساتھ انہیں انٹرنیٹ پر پاکستان کی تمام نیوز سائٹس کے پلیٹ فارم پاکستان سائبر نیوز ایسوسی ایشن کے پہلے صدر ہونے کا بھی اعزاز حاصل ہے

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے