Home / اہم ترین / ایم کیو ایم میں ہونے والی ٹوٹ پھوٹ میں پیپلز پارٹی کا کوئی کردار نہیں ہے مولا بخش چانڈیو

ایم کیو ایم میں ہونے والی ٹوٹ پھوٹ میں پیپلز پارٹی کا کوئی کردار نہیں ہے مولا بخش چانڈیو

ایم کیو ایم والے ایک دوسرے کے راز فاش کرتے ہیں پھر روتے ہیں
فاروق ستار جس انداز سے بولتے ہیں اس انداز میں سوچتے نہیں ہیں
جو انسانوں کو بے سکون کرتے تھے آج خود بے سکون ہوگئے ہیں
یہ لوگ اردو بولنے والوں کو اپنا غلام سمجھ رہے تھے، میڈیا سے گفتگو
حیدرآباد( مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان پیپلزپارٹی کے مرکزی رہنما مولا بخش چانڈیو کا کہنا ہے کہ ایم کیو ایم رہنما ایک دوسرے کے روز فاش کرتے ہیں پھر رات کو روتے ہیں۔ ان کا رونا ان کے کی غلطیوں کی نشاندہی کرتا ہے۔ حیدر آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مولا بخش چانڈیو کا کہنا تھا کہ معلوم نہیں ڈاکٹر فارق ستار کیا ہوگیا ہے۔6,6باراستعفے دیتے ہیں اور پھر واپس لے لیتے ہیں۔ فارو ق ستار جس انداز سے بولتے ہیں اس انداز سے سوچتے نہیں ہیں۔ مولا بخش چانڈیو نے کہا کہ ایم کیو ایم میں ہونیوالی ٹوٹ پھوٹمیں پیپلز پارٹی کا کوئی کردار نہیں ہم کسی بھی سیاسی صورتحال سے فائدہ نہیں اٹھانا چاہتے‘ ایم کیو ایم والے خود بتائیں کہ وہ کون ہے جو انہیں لڑارہا ہے۔ ڈاکٹر فارق ستار کو کنوینر شپ سے ہٹانا ایم کیو ایم کا اندرونی معاملہ ہے۔ پیپلز پارٹی کے رہنما کا کہنا تھا کہ کراچی اور حیدر آباد کے بانی مسائل کے ذمہ دار یہی ہیں جو برسوں سے وہاں قابض ہیں۔ آپ انسانوں کو بے سکون کرتے تھے آج خود بے سکون ہوگئے۔ ان خا حال آج سب دیکھ رہے ہیں۔ ایک دوسرے کے بخئے ادھیڑتے ہیں۔ راز فاش کرتے ہیں اور پھر رات کو روتے ہیں۔ جس طرح کراچی کے لوگوں نے ان پر اعتماد کیا وہ اس پر پورے نہیں اترے‘ وہ اردوبولنے والوں کو غلام سمجھ رہے ہیں۔اب کراچی کے عوام کو بھی فیصلہ کرلینا چاہئے۔

About محمد ہارون عباس قمر

محمد ہارون عباس، صحافی، براڈکاسٹراورسافٹ وئر انجینئرپاکستان کے مانچسٹر فیصل آباد میں پیدا ہوئے۔ابتدائی تعلیم فیصل آباداوربراڈکاسٹنگ کی تعلیم ہلورسم اکیڈمی ، ہالینڈسے حاصل کی۔ کمپیوٹر میں تعلیم اسلام آباد، پاکستان سے حاصل کرنے کے ساتھ ساتھ، ریڈیائی صحافت سے وابستہ رہے ہیں۔اس حوالے سے پاکستان کے مختلف ٹی وی چینلزکے ساتھ ساتھ ریڈیو ایران،ریڈیو پاکستان سے ان کی وابستگی رہی۔ تعلیم اور صحافتی سرگرمیوں کے سلسلے میں وہ پاکستان کے مختلف شہروں کے علاوہ ایران، سری لنکا، نیپال، وسطی ایشیائی ریاستوں‌کے علاوہ مشرقی یوروپ کے مختلف ممالک کا سفر کر چکے ہیں۔مختلف اخبارات میں سماجی، سیاسی اور تکنیکی امور پر ان کے مضامین شائع ہوتے رہتے ہیں۔علاوہ ازیں اردو زبان کو کمپیوٹزاڈ شکل میں ڈھالنے میں ان کا بہت بڑا کردار ہے۔ محمد ہارون عباس ممتاز این جی اوز سے وابستہ رہے ہیں۔ جن میں جنوبی ایشیائی ممالک کی تنظیم ساوتھ ایشین سنٹر اور پاکستان کی غیر سرکاری تنظیموں کے نمائندہ فورم پاکستان این جی اوز فیڈرشین شامل ہیں۔ علاوہ ازیں پاکستان مسلم لیگ کے مرکزی میڈیا ونگ اسلام آباداور پاکستان کے پارلیمنٹرینز کی تنظیم پارلیمنٹرین کمشن فار ہیومین رائٹس میں بھی تکنیکی امور کے نگران رہے ۔وہ پاکستان کے سب سے بڑے نیوز گروپ جنگ گروپ آف نیوزپیپرز، پاکستان کے اردو زبان کے فروغ کے لئے قائم کئے گئے ادارے مقتدرہ قومی زبان ، پاکستان کے سب سے بڑے صنعتی گروپ دیوان گروپ آف کمپنیز کو تکنیکی خدمات فراہم کرتے رہے ہیں۔ محمد ہارون عباس القمر آن لائن کے انتظامی اور تکنیکی امور کے نگران ہیں۔ اس کے ساتھ ساتھ انہیں انٹرنیٹ پر پاکستان کی تمام نیوز سائٹس کے پلیٹ فارم پاکستان سائبر نیوز ایسوسی ایشن کے پہلے صدر ہونے کا بھی اعزاز حاصل ہے

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے