Home / شوبز / سنجیدہ، مزاحیہ کے علاوہ ہر طرح کے کردار کرنا چاہتی ہوں : میبل خان

سنجیدہ، مزاحیہ کے علاوہ ہر طرح کے کردار کرنا چاہتی ہوں : میبل خان

سوسائٹی میں پائی جانے والی خامیوں کو سامنے لانے والے پروڈیوسرز کی حوصلہ افزائی کرنی چاہیے:’’ایکسپریس‘‘سے گفتگو۔ فوٹو: نیٹ

سوسائٹی میں پائی جانے والی خامیوں کو سامنے لانے والے پروڈیوسرز کی حوصلہ افزائی کرنی چاہیے:’’ایکسپریس‘‘سے گفتگو
۔ فوٹو: نیٹ

 لاہور:  اداکارہ وماڈل میبل خان نے کہاہے کہ سنجیدہ اورمزاحیہ کے علاوہ بھی ہرطرح کے کردار کرنا چاہتی ہوں بطورفنکارہ خود کوصرف ہیروئن تک محدود نہیں رکھنا چاہتی میری خواہش ہے کہ لوگ مجھے بہترین اداکارہ کے طورپرجانیں۔

ان خیالات کااظہارانھوں نے ’’ایکسپریس‘‘سے گفتگوکرتے ہوئے کیا۔ میبل خان نے کہا کہ میں سمجھتی ہوں کہ ایک فنکار کو ہر قسم کے رول کے لیے خود کو تیار رکھنا چاہیے کیونکہ اس کی اصل شناخت انہی کرداروں سے ہی بنتی ہے۔ شروع سے ہی میری ترجیح سلور اسکرین ہی رہی ہے، پاکستان میں اچھی فلمیں بننے لگی ہیں،جس کے باعث پڑھے لکھے اور باصلاحیت لوگ اس کا حصہ بن رہے ہیں۔ باکس آفس پر بدلتی ترجیحات کو بھی وہ اچھی طرح سمجھتے ہوئے فلمیں بنانے کی ضرورت ہے۔

دنیابھرمیں   فلم اور ٹی وی  کے ذریعے اپنا سوٖفٹ امیج اور اپنی ثقافت کوپروموٹ کرنے کا سلسلہ نیا نہیں بلکہ بہت پرانا ہے۔ ہمیں بھی ان پہلوؤں کو مدنظر رکھتے ہوئے  ہر موضوع پر فلم بنانی چاہیے، فی الحال کامیڈی اور میوزیکل فلموں کی ضرورت ہے تاکہ فلم بین انٹرٹین ہوں۔ انھوں نے کہا کہ ہمارا ملک اس لحاظ سے خوش قسمت ہے کہ شوبز، سپورٹس سمیت ہر شعبے میں بے شمار ٹیلنٹ ہے، لیکن ان کو تراش خراش کر سامنے لانے کی ضرورت ہے۔

یہی وجہ ہے کہ ہمارے فنکار اور گلوکار ہمسایہ ملک بھارت میں بے حد مقبول ہیں، ان کی یہی مقبولیت انتہا پسند ہندوتنظیموں کوبرداشت نہیں ہے۔ میبل خان نے کہا کہ  ہمارے فلم اور ٹی وی میکرز کو چاہیے کہ وہ اپنی ذمہ داریوں کا احساس کرتے ہوئے سول سوسائٹی کے مسائل کے ساتھ دنیا کو بتائیں کہ ہم پرامن قوم ہیں۔  ہمیں سوسائٹی میں پائی جانے والی خامیوں کو سامنے لانے والے پروڈیوسرز کی حوصلہ افزائی کرنی چاہیے ۔ایک سوال کے جواب میں انھوں نے کہا کہ نئی فلم میں چیلجنگ رول کر رہی ہوں جو میرے فلمی کیرئیر کو آگے بڑھانے میں اہم کردار ادا کرے گی۔

About محمد ہارون عباس قمر

محمد ہارون عباس، صحافی، براڈکاسٹراورسافٹ وئر انجینئرپاکستان کے مانچسٹر فیصل آباد میں پیدا ہوئے۔ابتدائی تعلیم فیصل آباداوربراڈکاسٹنگ کی تعلیم ہلورسم اکیڈمی ، ہالینڈسے حاصل کی۔ کمپیوٹر میں تعلیم اسلام آباد، پاکستان سے حاصل کرنے کے ساتھ ساتھ، ریڈیائی صحافت سے وابستہ رہے ہیں۔اس حوالے سے پاکستان کے مختلف ٹی وی چینلزکے ساتھ ساتھ ریڈیو ایران،ریڈیو پاکستان سے ان کی وابستگی رہی۔ تعلیم اور صحافتی سرگرمیوں کے سلسلے میں وہ پاکستان کے مختلف شہروں کے علاوہ ایران، سری لنکا، نیپال، وسطی ایشیائی ریاستوں‌کے علاوہ مشرقی یوروپ کے مختلف ممالک کا سفر کر چکے ہیں۔مختلف اخبارات میں سماجی، سیاسی اور تکنیکی امور پر ان کے مضامین شائع ہوتے رہتے ہیں۔علاوہ ازیں اردو زبان کو کمپیوٹزاڈ شکل میں ڈھالنے میں ان کا بہت بڑا کردار ہے۔ محمد ہارون عباس ممتاز این جی اوز سے وابستہ رہے ہیں۔ جن میں جنوبی ایشیائی ممالک کی تنظیم ساوتھ ایشین سنٹر اور پاکستان کی غیر سرکاری تنظیموں کے نمائندہ فورم پاکستان این جی اوز فیڈرشین شامل ہیں۔ علاوہ ازیں پاکستان مسلم لیگ کے مرکزی میڈیا ونگ اسلام آباداور پاکستان کے پارلیمنٹرینز کی تنظیم پارلیمنٹرین کمشن فار ہیومین رائٹس میں بھی تکنیکی امور کے نگران رہے ۔وہ پاکستان کے سب سے بڑے نیوز گروپ جنگ گروپ آف نیوزپیپرز، پاکستان کے اردو زبان کے فروغ کے لئے قائم کئے گئے ادارے مقتدرہ قومی زبان ، پاکستان کے سب سے بڑے صنعتی گروپ دیوان گروپ آف کمپنیز کو تکنیکی خدمات فراہم کرتے رہے ہیں۔ محمد ہارون عباس القمر آن لائن کے انتظامی اور تکنیکی امور کے نگران ہیں۔ اس کے ساتھ ساتھ انہیں انٹرنیٹ پر پاکستان کی تمام نیوز سائٹس کے پلیٹ فارم پاکستان سائبر نیوز ایسوسی ایشن کے پہلے صدر ہونے کا بھی اعزاز حاصل ہے

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے