Home / اہم ترین / چیف جسٹس کے دوران سماعت پٹرول کی قیمت پر سخت ریمارکس

چیف جسٹس کے دوران سماعت پٹرول کی قیمت پر سخت ریمارکس

چیف جسٹس کے دوران سماعت پٹرول کی قیمت پر سخت ریمارکس

اسلام آباد: پٹرولیم مصنوعات پرہوشربا ٹیکسزکے اطلاق سے متعلق ازخودنوٹس کی سماعت کے دوران چیف جسٹس پاکستان نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا ہے کہ جب بھی عالمی مارکیٹ میں قیمتیں کم ہوتی ہے سیل ٹیکس لگادیاجاتاہے،عوام کوریلیف دینے کی باری آتی ہے توٹیکس لگ جاتا ہے۔تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں 3 رکنی بنچ نے پٹرولیم مصنوعات پر ہوشرباٹیکسز کے اطلاق سے متعلق ازخودنوٹس کی سماعت کی ،جسٹس اعجاز الاحسن نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ پٹرولیم مصنوعات پرکس قسم کے ٹیکسز کااطلاق ہوتا ہے؟،عالمی مارکیٹ میں پٹرولیم مصنوعات کی کیا قیمتیں ہیں؟اوریہاں پرپٹرولیم مصنوعات کی کیا قیمتیں ہیں؟ ،اس پر ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے کہا کہ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں ریجن سے کم ہیں،چیف جسٹس آف پاکستان نے کہا کہ بھارت سے قیمتوں کاموازنہ نہ کریں،کیابھارت کےساتھ ہمارا آئی ٹی میں کوئی مقابلہ ہے؟۔چیف جسٹس پاکستان نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ عالمی مارکیٹ میں پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں کم ہوں تو سیلز ٹیکس 25 فیصد بڑھا دیا جاتا ہے،جب عوام کوریلیف دینے کی باری آتی ہے توٹیکس لگ جاتا ہے۔چیف جسٹس پاکستان نے کہا کہ بھارت میں آئی ٹی انڈسٹری کی ترقی پاکستان سے زیادہ ہے،چارٹ بناکردیں کہ پٹرولیم مصنوعات پرکتنے ٹیکسزکااطلاق ہوتاہے،ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے کہا کہ پٹرولیم پرکسٹم ڈیوٹی،لیوی اورسیل ٹیکس کااطلاق ہوتاہے،چیف جسٹس نے کہا کہ آئل کمپنی اورڈیلرکامارجن کتناہے؟،ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے کہا کہ پٹرول پر 11.5 فیصدٹیکس لگتاہے،چیف جسٹس نے کہا کہ عالمی مارکیٹ میں قیمتیں کم ہوں توعوام کوریلیف نہیں ملتا،جسٹس اعجازالاحسن نے کہا کہ قیمت 100 ڈالرسے 50 ڈالرپرآجائے حکومت کم نہیں کرتی،چیف جسٹس آف پاکستان نے کہا کہ میراخیال ہے کہ پٹرولیم پرڈھاکہ ریلیف فنڈزلگا ہے،ہم مصنوعات کی قیمتوں کافرانزک آڈٹ کرائیں گے،عدالت نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ متعلقہ وزارت اورادارے تحریری جواب داخل کریں اورمتعلقہ ادارے پٹرولیم مصنوعات کے حوالے سے وضاحت کریں،سپریم کورٹ نے سماعت ایک ہفتے تک ملتوی کردی۔

About محمد ہارون عباس قمر

محمد ہارون عباس، صحافی، براڈکاسٹراورسافٹ وئر انجینئرپاکستان کے مانچسٹر فیصل آباد میں پیدا ہوئے۔ابتدائی تعلیم فیصل آباداوربراڈکاسٹنگ کی تعلیم ہلورسم اکیڈمی ، ہالینڈسے حاصل کی۔ کمپیوٹر میں تعلیم اسلام آباد، پاکستان سے حاصل کرنے کے ساتھ ساتھ، ریڈیائی صحافت سے وابستہ رہے ہیں۔اس حوالے سے پاکستان کے مختلف ٹی وی چینلزکے ساتھ ساتھ ریڈیو ایران،ریڈیو پاکستان سے ان کی وابستگی رہی۔ تعلیم اور صحافتی سرگرمیوں کے سلسلے میں وہ پاکستان کے مختلف شہروں کے علاوہ ایران، سری لنکا، نیپال، وسطی ایشیائی ریاستوں‌کے علاوہ مشرقی یوروپ کے مختلف ممالک کا سفر کر چکے ہیں۔مختلف اخبارات میں سماجی، سیاسی اور تکنیکی امور پر ان کے مضامین شائع ہوتے رہتے ہیں۔علاوہ ازیں اردو زبان کو کمپیوٹزاڈ شکل میں ڈھالنے میں ان کا بہت بڑا کردار ہے۔ محمد ہارون عباس ممتاز این جی اوز سے وابستہ رہے ہیں۔ جن میں جنوبی ایشیائی ممالک کی تنظیم ساوتھ ایشین سنٹر اور پاکستان کی غیر سرکاری تنظیموں کے نمائندہ فورم پاکستان این جی اوز فیڈرشین شامل ہیں۔ علاوہ ازیں پاکستان مسلم لیگ کے مرکزی میڈیا ونگ اسلام آباداور پاکستان کے پارلیمنٹرینز کی تنظیم پارلیمنٹرین کمشن فار ہیومین رائٹس میں بھی تکنیکی امور کے نگران رہے ۔وہ پاکستان کے سب سے بڑے نیوز گروپ جنگ گروپ آف نیوزپیپرز، پاکستان کے اردو زبان کے فروغ کے لئے قائم کئے گئے ادارے مقتدرہ قومی زبان ، پاکستان کے سب سے بڑے صنعتی گروپ دیوان گروپ آف کمپنیز کو تکنیکی خدمات فراہم کرتے رہے ہیں۔ محمد ہارون عباس القمر آن لائن کے انتظامی اور تکنیکی امور کے نگران ہیں۔ اس کے ساتھ ساتھ انہیں انٹرنیٹ پر پاکستان کی تمام نیوز سائٹس کے پلیٹ فارم پاکستان سائبر نیوز ایسوسی ایشن کے پہلے صدر ہونے کا بھی اعزاز حاصل ہے

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے