Home / اہم ترین / حکومت نے شہباز شریف کو پی اے سی چیئرمین تعینات کرنے کے مطالبے کو مسترد کر دیا

حکومت نے شہباز شریف کو پی اے سی چیئرمین تعینات کرنے کے مطالبے کو مسترد کر دیا

اسلام آباد: وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے کہا ہے کہ شہباز شریف کو چیئرمین پی اے سی بنانے کا مطالبہ اتنا ہی غیر اخلاقی ہے جتنی ان کی پانچ سالہ کارکردگی ہے، گزشتہ حکومتوں کی کابینہ کے فیصلوں پر پانچ پانچ سال تک عمل نہیں ہوا۔

اسلام آباد میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ پی اے اسی چیئرمین کے معاملے پر ڈیڈلاک برقرار ہے، بڑے بھائی کی کرپشن پر چھوٹے بھائی کو لگادیں یہ کیسے ممکن ہے، یہ چاہتے ہیں کیسز واپس ہوجائیں اور انہیں این آر او مل جائے تو سب ٹھیک ہے۔

فواد چوہدری نے کہا کہ یہ چاہتے ہیں کہ مل کر کھیلیں اور ان سے ہم ماضی پر احتساب نہ کریں پر حکومت مک مکا کرکے نہیں کھیلے گی۔

ان کا کہنا تھا کہ لوگوں کو ان کی شکلوں سے نفرت ہوگئی ہے، یہ چاہتے ہیں حکومت ان کے کیسز پر ہاتھ ہلکا کردے، اگر ان کی لوٹ مار پر بات کریں تو یہ پارلیمںٹ میں منہ بنالیتے ہیں۔

وزیر اطلاعات نے کہا کہ آسیہ بی بی سے متعلق تاثر دیا گیا کوئی غیرملکی سفیر لے کر چلا گیا ہے، آسیہ بی بی کے معاملے پر غیرذمہ دارانہ رویے پر ملک کو نقصان پہنچ سکتا ہے، عافیہ صدیقی کے معاملے میں جلد پیش رفت ہوگی۔

فواد چوہدری نے کہا کہ اب تک وفاقی کابینہ کے 11 اجلاس ہوئے، کابینہ نے 11 اجلاس میں 120 فیصلے کیے 72 پر عمل درآمد ہوگیا ہے، 31 پر عمل درآمد ہونا باقی ہے، چار فیصلوں پر عمل درآمد ابھی شروع ہی نہیں ہوا۔

انہوں نے کہا کہ لبرٹی کے نام سے نئی ایئرلائن کو لائسنس دیا گیا ہے، احمد نواز سکھیرا سرمایہ کاری بورڈ کے سیکریٹری ہوں گے، متروکہ وقف املاک کی اربوں روپے کی املاک ہیں، ادائیگیوں کے توازن کے حوالے سے مسئلہ اب اتنا اہم نہیں رہا ہے۔

وزیر اطلاعات نے کہا کہ پاکستان اور برطانیہ میں قیدیوں کے تبادلے پر پروٹوکول پر دستخط ہوئے، دونوں ممالک کے قیدی اپنے اپنے ملکوں میں سزا مکمل کرسکیں گے۔

About ویب ڈیسک

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے