Breaking News
Home / اہم ترین / آسیہ کیس کوبین الاقوامی دباؤ کےتحت لیاگیااور رہائی کو مالیاتی قرضوں کےساتھ مشروط کیاگیا۔مولانا فضل الرحمان

آسیہ کیس کوبین الاقوامی دباؤ کےتحت لیاگیااور رہائی کو مالیاتی قرضوں کےساتھ مشروط کیاگیا۔مولانا فضل الرحمان

پشاور:جمعیت علماء اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ آسیہ کیس کو بین الاقوامی دباؤ کے تحت لیا گیا اور رہائی کو مالیاتی قرضوں کے ساتھ مشروط کیا گیا۔

پشاور میں علماء کنونشن سےخطاب کرتےہوئےمولانا فضل الرحمان نےکہاکہ اس حکومت نے توہین رسالتﷺ کے قانون میں ترمیم کرنے کی کوشش کی اوراس قانون کو غیرمؤثربنادیاگیاہے،آسیہ کیس کوبین الاقوامی دباؤ کےتحت لیاگیاکیونکہ رہائی کو مالیاتی قرضوں کےساتھ مشروط کیاگیاتھا،یہ کیسا فیصلہ ہےجس پرپوری امت کوٹھیس پہنچی ہےجبکہ برطانیہ کی پارلیمنٹ،چیف جسٹس اوریورپی یونین نےآسیہ کے فیصلے کو سراہا ہے۔

مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ پاکستان ایک نظریاتی ملک ہے اور اسلام اس کا نظریہ ہےلیکن مغربی قوتیں ملک کا اسلامی اور مذہبی تشخص ختم کرنا چاہتی ہیں ہم لاکھوں مسلمانوں کی قربانی کو رائیگاں نہیں ہونے دیں گے۔

جے یو آئی ف کے سربراہ نے کہا کہ پاکستان کو ایک سیکولر اسٹیٹ بنانے کی کوشش کی جا رہی ہے عمران خان باہر کا مہرہ ہے جسے پختون بیلٹ سے مذہب کو اکھاڑنے کیلئے مسلط کیا گیا لیکن ہم آئین اور قانون کا دفاع کریں گے اور پاکستان کی حفاظت کریں گے۔

About ویب ڈیسک

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے