Breaking News
Home / عالمی حالات / جنوبی ایشیاء / افغانستان / افغانستان۔غزنی اورارزگان میں کاروائیاں امریکی اتحادی افواج سمیت9ٹینک وگاڑیاں تباہ،29جاںبحق۔طالبان کادعویٰ

افغانستان۔غزنی اورارزگان میں کاروائیاں امریکی اتحادی افواج سمیت9ٹینک وگاڑیاں تباہ،29جاںبحق۔طالبان کادعویٰ

ترین کوٹ/قندھار-افغابن نیشنل آرمی پرافغان طالبان نےصوبہ غزنی کےقرہ باغ،شلگراورگیرواضلاع میں حملہ کیا۔افغان طالبان نشریات کےمطابق گزشتہ روز صبح کےوقت افغان طالبان نےضلع قرہ باغ گونگی،مشکی،باران قلعہ اورخالو خیل کےعلاقوں میں مجاہدین نےکابل سےقندہارجانے والے فوجی و سپلائی کانوائے پرحملہ کیا اور شدید دھماکے کئےگئے،یہ سلسلہ رات گئےتک جاری رہا،جس کے نتیجے میں 16 سیکورٹی اہلکار ہلاک جبکہ 13 زخمی ہونے کے علاوہ 3 بکتربند ٹینک، 3 ٹرائلرز اور 2 آئل ٹینکر بھی تباہ ہوئے۔ان خبروں کی تصدیق افغانستان کی سرکاری ذرائع یا نیٹو ذرائع نے نہیں کی بلکہ آزاد ذرائع نے حملوں کی تصدیق بزریعہ سوشل میڈیا بھی کی ہے جو کہ فیس بک پہ موجود ہے تاہم ہمارے ذرائع نے بھی تصدیق کی ہے مگر ہلاکتوں کی تعداد جاننے میں کامیاب نہ ہوسکے۔

دوسری جانب جمعہ اورہفتےکی درمیانی شب عشا کےوقت ضلع گیرو کےمرکز کےقریب واقعافغانستان کے حکومتی چوکی پرطالبان نے حملہ کیا،جس کے نتیجے میںافغان نیشنل پولیس و آرمی کو جانی و مالی نقصانات کا سامنا ہوا،لیکن اطلاع آنے تک تفصیل فراہم نہ ہوسکی۔ذرائع کے مطابق دشمن کی جوابی فائرنگ سے ایک مجاہد بھی زخمی ہوا۔
دریں اثنا ضلع شلگر کے یرگٹو کے علاقے قندہار-کابل ہائی وے پر مجاہدین نے کانوائے پر حملہ کیا، جس میں ایک بڑی گاڑی تباہ ہوئی اور اس میں سوار اہلکار ہلاک ہوئے۔
ایک دوسری خبر میں افغان طالبان نے دعویٰ کیا ہے کہ طالبان سپاہیوں نے صوبہ اروزگان کے صدر مقام ترینکوٹ شہر میں دشمن کو رات کے وقت نو بجے نشانہ بنایا۔ جس سے خانقہ اور مراباد کے علاقوں میں امریکی اتحادی فوجوں اور افغان نیشنل آرمی نے ہیلی کاپٹروں کے ذریعے چھاپہ مارا، جن پر مجاہدین نے جوابی کاروائی کی، جو تین گھنٹے تک جاری رہی، جس سے امریکی اتحادیوں کو ہلاکتوں کا سامنا ہوا۔
واضح رہے اس واقعے میں افغان طالبان کا ایک سپاہی جاں بحق جبکہ ایک شدید زخمی ہوا۔

یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ ترین کوٹ جو کہ صوبہ ارزگان کا دارلخلافہ ہے میں پہلے بھی افغان طالبان نے وہاں اسٹریلیا کے افواج کو ستمبر 2016 میں کافی نقصان پہنچایا تھا اور تقریبا* صوبے کو قبضے میں لے لیا تھا ۔

About ویب ڈیسک

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے