یورپی پارلیمنٹ کا تنازعہ کشمیر کے پُرامن حل کے لئے براہ راست مذاکرات پر زور

یورپی یونین نے بھارت اور پاکستان پر زور دیا ہے کہ وہ انسانی حقوق کے بین الاقوامی تقاضوں کے مکمل احترام اور تنازعہ کشمیر کے پُرامن حل کے لئے براہ راست مذاکرات شروع کریں۔

رمضان شوگر ملز کیس: احتساب عدالت لاہور میں آج سماعت، 46…

وزیراعظم عمران تاجروں اور قبائلی عوام سے کیا ہوا وعدہ آج…

ڈپٹی چیئرمین سینیٹ نے سری لنکن وزیراعظم کو کرکٹ سے متعلق…

خارجہ امور کے بارے میں یورپی یونین کی اعلیٰ نمائندہ اور یورپی کمیشن کی نائب صدر فیڈریکاموغرینی کی جانب سے یورپی یونین کی وزیر تیتی توپئرانین نے بحث کا آغاز کرتے ہوئے کہاکہ کشمیر میں کوئی بھی کسی مزیدمحاذ آرائی کا متحمل نہیں ہوسکتا۔
انہوں نے بھارت اور پاکستان پر زور دیا کہ وہ کنٹرول لائن کے دونوں جانب مقیم کشمیری عوام کے مفاد میں تنازعہ کشمیر کے پُرامن اور سیاسی حل کی تلاش پرتوجہ مرکوز کریں۔انہوں نے کہاکہ خطے میں کسی بھی عدم استحکام اور سلامتی کودرپیش خطرے سے بچائو کے لئے کشمیر کے دیرینہ تنازعہ کاواحدحل مذاکرات ہیں۔
یورپی یونین کی وزیرنے کشیدگی کے خاتمے کی اہمیت پرزوردیتے ہوئے کہاکہ کشمیر کے معاملے پر ہمارے موقف میں کوئی تبدیلی نہیں آئی۔انہوں نے کہاکہ لوگوں کی نقل وحرکت کی آزادی مواصلاتی نظام کی مکمل بحالی کے ساتھ ساتھ مقبوضہ کشمیر کے محصورعوام کے لئے اشیائے ضروریہ کی فراہمی کو یقینی بنایاجاناچاہیے۔ 
تیتی توپئرانین نے بحث سمیٹتے ہوئے مزید کہا کہ یورپی یونین دونوں ایٹمی طاقتوں کے درمیان کشیدگی کے خاتمے کے لئے موجودہ صورتحال پرگہری نظررکھے گی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں