شام میں ترکی اور بشارالاسد کی فوجوں میں لڑائی

دمشق (انٹرنیشنل ڈیسک) شام کے شمالی علاقوں میں ترکی اور بشار الاسد کی فوجوں میں جھڑپیں ہوئی ہیں۔ امریکی خبر رساں ادارے اے پی کے مطابق تُرک فوج سے اسدی فوج کی جھڑپیں شام کے شمالی علاقوں میں ہوئیں، جس میں بھاری اسلحہ اور توپ خانے کا بھی استعمال کیا گیا۔ خبر رساں ادارے نے جھڑپوں میں ہلاکتوں یا زخمیوں کی تعداد کے حوالے دے معلومات نہیں دی۔ اے پی نے اسدی خبر رساں ادارے کے حوالے سے بتایا کہ تُرک فوج کے پاس موجود شام کے شہر راس العین کے قریب واقع ام الشفا نامی علاقے میں فریقین میں لڑائی جاری ہے ۔ دوسری جانب تُرک وزارت دفاع نے کہا ہے کہ دریائے فرات کے مشرقی کنارے پر قامشلی اور دیریک کے درمیانی علاقے میں ترکی اور روس کا مشترکہ گشت منصوبہ بندی کے مطابق پایہ تکمیل کو پہنچا ہے۔ وزارت دفاع سے جاری کردہ اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ دریائے فرات کے مشرقی کنارے پر یہ سیکورٹی کاروائیاں عوام کی سلامتی کے لازمی تدابیر اور حساسیت کا مظاہرہ کرتے ہوئے مکمل کی گئی ہیں۔ اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ یہ گشت فور بائی فور گاڑیوں سمیت مجموعی طور پر8گاڑیوں اور ڈرونز کے ذریعے انجام پایا۔ ترک اور روسی فوجیوں نے شام کے اندر 10 کلو میٹر تک اور 88 کلو میٹر کی طوالت کی حامل گزرگاہ میں اپنے فرائض ادا کیے ہیں۔

وٹس ایپ کے ذریعے خبریں اپنے موبائل پر حاصل کرنے کے لیے کلک کریں

تمام خبریں اپنے ای میل میں حاصل کرنے کے لیے اپنا ای میل لکھیے

اپنا تبصرہ بھیجیں