عراق ،امریکی ایئربیس پر حملہ،مظاہروں میں 23 ہلاک

بغداد: حکومت اور سیکورٹی فورسز کے درمیان جھڑپیں ہورہی ہیں‘ اہل کار نوجوان کو گرفتار کرکے لے جا رہے ہیں
بغداد: حکومت اور سیکورٹی فورسز کے درمیان جھڑپیں ہورہی ہیں‘ اہل کار نوجوان کو گرفتار کرکے لے جا رہے ہیں

بغداد (انٹرنیشنل ڈیسک) عراق میں ایک امریکی ائربیس پر نامعلوم افراد نے میزائل داغ دیے۔ خبررساں اداروں کے مطابق عراقی وزارت ِ دفاع نے بتایا کہ امریکی فوجیوں کی تعیناتی والے موصل کے قیارہ فوجی ہوائی اڈے پر17 میزائلوں سے حملہ کیا گیا۔ وزارت سے منسلک میڈیا سیکورٹی نیٹ ورک نے تحریری اعلان میں بتایا کہ موصل کے جنوب میں واقع ائر بیس پر 17 عدد کاتویاشا میزائل داغے گئے ، جن سے کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔ اعلامیے میں یہ بھی واضح کیا گیا ہے کہ حملے کے مرتکب افراد کی تلاش کے لیے سیکورٹی فورسز نے علاقے میں کارروائی شروع کر دی ہے ۔ موصل کے جنوب میں شہر سے 70 کلو میٹر کی دوری پر واقع یہ فوجی ہوائی اڈا 2016ء سے امریکی فوجیوں کے زیر استعمال ہے ۔ دوسری جانب عراقی دارالحکومت بغداد اور جنوبی شہروں میں حکومت مخالف مظاہروں اور حکومت کی ان کے خلاف شدید مداخلت سے گزشتہ ہفتے 23 افراد ہلاک ہوگئے۔ خود مختار انسانی حقوق کے اعلیٰ کمیشن نے ایک تحریری بیان میں واضح کیا ہے کہ 3 سے 7نومبر کو بغداد، کربلا، بصرہ اور ذی قار میں مظاہروں کے دوران پُرتشدد واقعات میں 23 افراد جاں بحق اور1077 زخمی ہوئے۔ اعلان کے مطابق پولیس نے اس دورانیے میں 201 افراد کو گرفتار کیا گیا، جن میں سے 170 کو آزاد کر دیا گیا۔ بصرہ شہر میں مظاہرے کے خلاف پولیس کی مداخلت سے 2مظاہرین ہلاک ہو گئے ۔ بصرہ کے ادارہ صحت کے ایک افسر نے اپنا نام خفیہ رکھنے کی شرط پر بتایا ہے کہ شہر کے مختلف اسپتالوں میں 2 افراد کی لاشیں اور درجنوں زخمی موجود ہیں۔ ہلاک اور زخمی ہونے والوں کو اصلی گولیاں لگی ہیں، جب کہ آنسو گیس سے متاثرہ افراد کو سانس لینے میں سخت دشواری کا سامنا ہے ۔ جب کہ عراقی حکام نے تصدیق کی ہے کہ دارالحکومت بغداد کے ایک اہم پل پر مظاہرین کا قبضہ ختم کرا لیا گیا ہے ۔ بتایا گیا ہے کہ سیکورٹی فورسز نے قبضہ ختم کرانے کے لیے آنسو گیس اور دھچکا پہنچانے والے دستی بموں کا استعمال کیا۔ سنک نامی پل کی بازیابی کے لیے حکومتی سیکورٹی اہلکاروں کے ساتھ مظاہرین کی جھڑپ کو حالیہ مظاہروں کے دوران ہونے والی شدید ترین جھڑپ قرار دیا گیا ہے ۔ ایک حکومتی اہلکار نے نام مخفی رکھتے ہوئے بتایا کہ اس دوران کم از کم 35 افراد زخمی ہوئے ۔ دریائے دجلہ پر قائم یہ پل سخت سیکورٹی والے گرین زون کوبقیہ شہر کو ملاتا ہے ۔

وٹس ایپ کے ذریعے خبریں اپنے موبائل پر حاصل کرنے کے لیے کلک کریں

تمام خبریں اپنے ای میل میں حاصل کرنے کے لیے اپنا ای میل لکھیے

اپنا تبصرہ بھیجیں