عراق بھی روسی دفاعی نظام خریدنے کیلئے کوشاں

تہران/ بغداد (انٹرنیشنل ڈیسک) ایران میں تعینات عراقی سفیر سعد جواد قندیل نے تصدیق کی ہے کہ بغداد حکومت روس کا ایس 300 فضائی دفاعی میزائل نظام خریدنے کے لیے ماسکو کے ساتھ مذاکرات کر رہی ہے۔ روسی خبر رساں ایجنسی اسپوٹنک نے سفیر کے حوالے سے بتایا کہ مذکورہ سسٹم کی خریداری جلد عمل میں آ سکتی ہے۔ سفیر کا کہنا تھا کہ ایس 300 سسٹم کی خریداری کا معاملہ روس اور عراق کے درمیان بات چیت کی میز پر موجود ہے۔ سعد جواد کا کہنا تھا کہ عراق اپنے ہتھیاروں کے ذرائع کو متنوع بنانے کا خواہش مند ہے اور عراق کے روس کے ساتھ ہتھیاروں سے متعلق سمجھوتے موجود ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ عراقی روسی تعلقات بہت اچھے ہیں۔ بغداد تمام ہمسایہ ممالک کے ساتھ اچھے تعلقات کا خواہاں ہے۔ اس سے قبل عراقی پارلیمان میں دفاع اور سیکورٹی سے متعلق کمیٹی کے سربراہ محمد رضا یہ بتا چکے ہیں کہ بغداد حکومت نے ایس 300 سسٹم کی خریداری کے حوالے سے ماسکو کے ساتھ دوبارہ بات چیت کا آغاز کر دیا ہے۔ یاد رہے کہ عراق 2017ء سے مذکورہ روسی فضائی دفاعی سسٹم خریدنے کی کوشش کر رہا ہے۔ تاہم امریکا کی جانب سے اقتصادی پابندیاں عائد کرنے کی دھمکی ابھی تک مذاکرات کی راہ میں رکاوٹ بنی ہوئی ہے۔ خیال رہے کہ اتوار کی شام ایک بار پھر امریکی فوجی اڈے پر راکٹ داغے گئے۔ عراقی وزارتِ دفاع نے کہا ہے کہ امریکی افواج کے زیر استعمال ایک اڈے پر راکٹوں سے حملہ کیا گیا، جس میں 4 عراقی فوجی زخمی ہو ئے ہیں۔ وزارت کا کہنا ہے کہ بغداد کے شمال میں صوبہ صلاح الدین میں واقع البلد ائر بیس پراتوار کے روز 8 راکٹ فائر کیے گئے۔ بیان کے مطابق فوجی اڈے کو نقصان پہنچا ہے۔ سیکورٹی میڈیا سیل نے بتایا کہ بلد اڈے پر 8 راکٹوں سے حملہ کیا گیا، جس کے نتیجے میں عراقی فضائیہ کے ایک اہل کار سمیت کئی عراقی زخمی ہوئے۔ خیال رہے کہ ایران نواز عسکری گروپوں نے رواں ماہ امریکی ڈرون حملے میں ایرانی پاسدارانِ انقلاب کے کمانڈر جنرل قاسم سلیمانی کی ہلاکت کے بعد بدلہ لینے کی دھمکی دی تھی۔ بدھ کے روز ایران نے جوابی کاروائی کرتے ہوئے عراق میں 2 امریکی اڈوں کو میزائلوں سے نشانہ بنایا تھا۔ اسی روز بعد میں بغداد کے انتہائی سخت سیکورٹی والے علاقے گرین زون میں، جہاں امریکی سفارت خانہ واقع ہے، راکٹ بھی گرے تھے۔

وٹس ایپ کے ذریعے خبریں اپنے موبائل پر حاصل کرنے کے لیے کلک کریں

تمام خبریں اپنے ای میل میں حاصل کرنے کے لیے اپنا ای میل لکھیے

اپنا تبصرہ بھیجیں