وزارت پیٹرولیم اور اوگرا کو 72 گھنٹے کا الٹی میٹم آج اہم اجلاس طلب

نوٹس نہ لینے کی صورت میں 20 ہزار سے زائد ٹینکرز پہیہ جام کردیں گے، آئل ٹینکرز کنٹریکٹرز
آئل انڈسٹری کو چند فرموں نے چور دروازے سے داخل ہو کر ہائی جیک کر رکھا ہے، عابد آفریدی
کراچی (نیوز ڈیسک) آئل ٹینکرز کنٹریکٹرز نے گزشتہ 6 ماہ سے کیو سسٹم کی دھجیاں اڑانے کے خلاف وفاقی وزارت پیٹرولیم، اوگرا کو 72 گھنٹے کا الٹی میٹم دے دیا ہے۔ نوٹس نہ لینے کی صورت میں 20 ہزار سے زائد ٹینکرز کا سڑکوں پر پہیہ جام، جامشورو تھرمل پاور پلانٹ ملک بھر میں گرڈ اسٹیشنوں، تیل ڈپوز، ہوائی اڈوں، کراچی بندرگاہوں، بجلی گھروں سمیت پیٹرول پمپس کو تیل فراہمی بند کر دی جائے گی۔ پیر کو منعقدہ اجلاس میں اہم اعلان متوقع ہیں۔ ایسوسی ایشن کے صدر عابداللہ آفریدی اور سینئر نائب صدر سید قسیم آغا کے مطابق آئل انڈسٹریز کو گزشتہ چند ماہ سے چند فرموں نے اپنی طاقت کے بل بوتے پر رات کے اندھیرے میں چور دروازے سے داخل ہو کر ہائی جیک کر رکھا ہے اور کمرشل لوڈنگ کرکے راتوں رات کروڑوں، ارب پتی بننے کا خواب دیکھ رہے ہیں جس کے نتیجے میں 235 سے زائد کنٹریکٹرز پر مشتمل 20 ہزار سے زائد آئل ٹینکرز مالکان کے گھروں کے چولہے بجھا دیے گئے ہیں لہٰذا نظام کو مفلوج نہیں ہونے دیں گے۔ آئل انڈسٹری کی ترقی میں ہمارا خون پسینہ شامل ہے لیکن پرامن کاروباری ہونے کا اعزاز رکھنے کے باعث قانون کو ہاتھ میں لینا نہیں چاہتے اور وفاقی وزارت پیٹرولیم، اوگرا حکام سمیت دیگر متعلقہ اداروں کو نوٹس لینے کے لیے درجنوں خطوط لکھ کر اختیارات استعمال کرنے کا مطالبہ کرتے رہے لیکن ہمیں مسلسل دیوار سے لگانے کی کوشش کی جاتی رہی، اب پانی سر سے اوپر چلا گیا ہے۔

وٹس ایپ کے ذریعے خبریں اپنے موبائل پر حاصل کرنے کے لیے کلک کریں

تمام خبریں اپنے ای میل میں حاصل کرنے کے لیے اپنا ای میل لکھیے

اپنا تبصرہ بھیجیں