کسٹمز اہلکاروں کی ملی بھگت سے پاکستانی برآمدات کو اربوں روپے نقصان کا انکشاف

پشاور: پاکستانی کسٹمز افسروں کی جانب سے ایک اور مالی بے ضابطگی کا انکشاف ہوا ہے۔

افغانستان سے سیبوں کی درآمد میں ایک ماہ کے دوران 69 لاکھ ڈالر خورد برد ہونے کی خبر آنے کے بعد ذرائع نے پاکستانی کسٹمز افسروں کی جانب سے ایک اور مالی بے ضابطگی کا انکشاف کیا ہے،جو ملکی خزانے کو نقصان پہنچانے کا باعث بن رہی ہے۔

 

ذرائع کا کہنا ہے کہ پاک افغان سرحد پر کسٹمز کے بدعنوان افسر برآمد کنندگان کو ٹیکس سے بچانے کیلئے برآمدی سرٹیفکیٹ کی تصدیق نہیں کرتے،پاکستان سے براستہ افغانستان ازبکستان اور تاجکستان جانے والے پھلوں کے ٹرک ڈرائیوروں کو ملی بھگت سے سادہ سرٹیفکیٹ تھما دیئے جاتے ہیں۔

وٹس ایپ کے ذریعے خبریں اپنے موبائل پر حاصل کرنے کے لیے کلک کریں

تمام خبریں اپنے ای میل میں حاصل کرنے کے لیے اپنا ای میل لکھیے

اپنا تبصرہ بھیجیں