لوگوں کو بے گھر ہونے سے بچایا جائے،کنور نوید جمیل

تعمیرشدہ گھروں کو مسمار کرنے سے پہلے متبادل فراہم کیا جائے،پارلیمانی لیڈر سندھ اسمبلی
تجاوزات اور غیرقانونی تعمیرات کی ذمے داری حکومت پر آتی ہے‘ متحدہ رہنما کی میڈیا سے گفتگو
کراچی(اسٹاف رپورٹر)سندھ اسمبلی میں ایم کیوایم پاکستان کے پارلیمانی لیڈر کنور نوید جمیل نے کہا ہے کہ شہر میں تجاوزات کے خلاف آپریشن جاری ہے تاہم تعمیرشدہ گھروں کو مسمار کرنے سے پہلے متبادل فراہم کیا جائے،لوگوں کو بے گھر ہونے سے بچایا جائے، افسران کی کرپشن کی وجہ سے غیرقانونی گھر بنے،وفاقی حکومت ریلوے کی زمین پر گھروں کے مکینوں کو متبادل دے، کراچی میں بڑے پلازہ اور سوسائٹیز بنتی رہیں لیکن کسی نے نہیں پوچھا،افسران واہلکار پیسے لے کر تعمیرات کراتے رہے۔ گزشتہ روز امیڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کنور نوید جمیل نے کہا کہ تجاوزات اور غیرقانونی تعمیرات کی ذمے داری حکومت پر آتی ہے۔انہوں نے وفاقی حکومت سے مطالبہ کیا کہ تعمیرشدہ گھروں کو مسمار کرنے سے پہلے متبادل دیں،جن افراد نے قبضے کرائے ان کے خلاف کارروائی ہو نی چاہیے ، سوال اٹھاتا ہوں کہ مئیر کراچی حکومت سندھ اور رینجرز سے مطالبہ کر رہے ہیں کہ کے ایم سی کی زمین کو قابضین سے بچایا جائے، مئیر کو نہ تو کوئی اختیار دیا ہے اور نہ ہی کوئی فورس دی ہوئی ہے، لوکل گورنمنٹ ایکٹ میں ترمیم کی جائے تاکہ اینٹی انکروچمنٹ فورس کو قبضہ چھڑانے کے لیے آرڈر کیا جا سکے،عدالت عظمیٰ سے اپیل ہے کہ چیف جسٹس ڈائریکشن جاری کریں کہ جو بھی سیاسی شخصیات اور افسران تجاوزات کی سرپرستی کرتے رہے ان کے خلاف سخت ایکشن لیا جائے۔ کنور نوید جمیل کا کہنا تھا کہ ایس بی سی اے کے افسران اربوں روپے کی کرپشن کر کے آج ملک سے باہر ہیں،کروڑ پتی ہونے والے افسران ملک کے اندر اور باہر کاروبار کر رہے ہیں۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ایم کیو ایم پر چائنا کٹنگ کا کوئی کیس رجسٹرڈ نہیں ہے،مئیر کراچی نے تجاوزات ہٹائی ہیں،بغیر عدالتی احکامات کے یہ نہیں ہو سکتا تھا، پولیس اور رینجرز ان کو دی گئی،میرے اوپرجو مقدمہ بنا وہ جھوٹا تھا۔

وٹس ایپ کے ذریعے خبریں اپنے موبائل پر حاصل کرنے کے لیے کلک کریں

تمام خبریں اپنے ای میل میں حاصل کرنے کے لیے اپنا ای میل لکھیے

اپنا تبصرہ بھیجیں