ٹرمپ نے یادگاروں کے تحفظ کا حکم نامہ جاری کردیا

 

واشنگٹن (انٹرنیشنل ڈیسک) امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ملک میں نصب تاریخی یادگاروں اور مجسموں کے تحفظ سے متعلق ایک صدارتی حکم نامے پر دستخط کر دیے۔ صدر ٹرمپ نے ٹوئٹر پر لکھا کہ امریکی یادگاروں اور مجسموں کے تحفظ اور حالیہ دنوں میں پُرتشدد جرائم کے خلاف نبرد آزما ہونے کے لیے ایک طاقتور نوعیت کی قرار داد پر میں نے دستخط کر دیے ہیں۔ ہمارے عظیم وطن کے خلاف ان غیر قانونی کاروائیوں کے مرتکب ہونے والوں کو طویل مدت کی سزائے قید دی جائے گی۔ یاد رہے کہ 25 مئی کو منیا پولیس شہر میں ایک پولیس اہل کار کے تشدد سے ایک سیاہ فام امریکی شہری جاں بحق ہو گیا تھا، جس کے بعد تقریباً 2 ہفتوں تک ملک بھر میں انتہائی پُرتشدد احتجاجی مظاہرے ہوئے تھے۔ ٹرمپ کے حکم نامے میں عوامی یادگاروں اور سرکاری املاک کی توڑ پھوڑ غیر قانونی قرار دی گئی ہے۔ حکم نامے کے مطابق یادگاروں کی حفاظت میں ناکام ریاستوں کی وفاقی مالی امداد بند بھی کر دی جائے گی۔ دستخط کے بعد امریکی صدر نے ذرائع ابلاغ سے گفتگو میں کہا کہ نیا صدارتی حکم نامہ مجسموں اور یادگاروں کو محفوظ بنائے گا۔ ادھر سفید فام پولیس کی جانب سے سیاہ فام امریکیوں کے خلاف تعصب کے کئی افسوس ناک واقعات سامنے آنے کے بعد ملک بھر میں احتجاج بدستور جاری ہے۔ مظاہرین نے سابق امریکی صدر ابراہم لنکن کا مجسمہ توڑنے کا منصوبہ بنایا ہے، جس کے بعد مجسمے کی حفاظت کے پیش نظر یادگار لنکن پارک کے باہر سیکورٹی تعینات کر دی گئی ہے۔ واضح رہے کہ امریکا کی کئی ریاستوں میں غلاموں سے متعلق مجسمے اور یادگاریں توڑی جا چکی ہیں۔ جن مجسموں اور یادگاروں پر حملے کیے گئے وہ متنازع تھے، کیوں کہ ان کے ذریعے سیاہ فام شہریوں کو غلام بنانے کی امریکی تاریخ اور سفید فام امریکیوں کی بالادستی کی منظر کشی کی گئی تھی۔ واضح رہے امریکا میں یہ ہنگامے 25 مئی کو 46 سالہ سیاہ فام غیر مسلح شخص جارج فلوئیڈ کی پولیس افسر کے ہاتھوں تکلیف دہ موت کے بعد شروع ہوئے ہیں۔ دوسری جانب منیا پولس کی شہری کونسل نے مقامی محکمہ پولیس ختم کرنے کی تجویز منظور کرلی۔ مذکورہ فیصلہ سیاہ فام شخص جارج فلوئیڈ کے پولیس کے ہاتھوں بہیمانہ قتل اور پھر پولیس کا محکمہ ختم کرنے کے پُرزور عوامی مطالبے پر کیا گیا ہے۔ منیا پولس کی سٹی کونسل نے جمعہ کے روز متفقہ طور پر شہر کے چارٹر میں ترمیم کرنے کی تجویز منظور کرلی، جس کے تحت شہر کا محکمہ پولیس ختم کردیا جائے گا۔

وٹس ایپ کے ذریعے خبریں اپنے موبائل پر حاصل کرنے کے لیے کلک کریں

تمام خبریں اپنے ای میل میں حاصل کرنے کے لیے اپنا ای میل لکھیے

اپنا تبصرہ بھیجیں