حجاج کرام نے رمی جمار اور قربانی کا آغاز کردیا

مکہ مکرمہ: حجاج کرام کے قافلے منیٰ پہنچنا شروع ہوگئے جبکہ شیطان کوکنکریاں مارنے (رمی جمار) اور قربانی کا آغاز بھی ہوچکا ہے۔

حجاج کرام قربانی کے بعد بال منڈوا رہے ہیں جس کے بعد مناسکِ حج مکمل کرنے کے بعد حجاجِ کرام اپنے احرام کھول کرمعمول کے لباس میں واپس آنا شروع ہوگئے ہیں جبکہ طوافِ زیارت بھی جاری ہے۔

سعودی  وزارت حج کی جانب سے رواں سال حج کرنے والوں کو رمی کیلیے سینیٹائز کی گئی کنکریوں کی تھیلیاں فراہم کیں ، جس کے بعد حجاج کورونا ایس او پیز پر عمل کرتے ہوئے گروپوں کی شکل میں جمرات کی رمی میں مصروف ہیں۔

دوسری جانب بین الااقوامی میڈیا نے اعتراف کیا ہے کہ رواں سال حج کے دوران سعودی حکومت نے امن و سلامتی یقینی بنانے کےلیے منیٰ میں سہولیات میں خاطر خواہ اضافہ کیا ہے۔

گزشتہ روز حجاجِ کرام نے مزدلفہ میں مغرب اور عشاء کی نمازیں ایک ساتھ ادا کرنے کے بعد چند گھنٹے آرام کرکے رات کا باقی ماندہ حصہ عبادت میں گزارا جبکہ انہوں نے قربانی کےلیے کوپن خریدے۔

 

وٹس ایپ کے ذریعے خبریں اپنے موبائل پر حاصل کرنے کے لیے کلک کریں

تمام خبریں اپنے ای میل میں حاصل کرنے کے لیے اپنا ای میل لکھیے

اپنا تبصرہ بھیجیں