ماحولیات کی تباہی کے ذمے دار ٹرمپ ہیں‘ بائیڈن

کیلیفورنیا: جوبائیڈن تقریر میں اپنے حریف ڈونلڈ ٹرمپ پر تنقید کررہے ہیں‘ امریکی صدر کو جنگلات میں ہول ناک آتش زدگی سے متعلق بریفنگ دی جارہی ہے‘ لوگ متاثر علاقوں سے نقل مکانی کررہے ہیں‘ فائر بریگیڈ آگ پر قابو پانے میں مصروف ہے‘ تباہ شدہ مقام پر صرف راکھ اور فولادی اشیا ہی بچی ہیں

واشنگٹن (انٹرنیشنل ڈیسک) امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے حریف جو بائیڈن نے مغربی امریکا کے جنگلوں میں لگنے والی آگ میں گلوبل وارمنگ کا کردار تسلیم نہ کرنے پر ڈونلڈ ٹرمپ کو ’’ماحول کو آگ لگانے والا‘‘ قرار دیا ہے۔ خبر رساں اداروں کے مطابق امریکا کی 3 ریاستوں کے جنگلات میں لگنے والی آگ خوفناک شکل اختیار کر گئی ہے جس کے نتیجے میں 40 افراد ہلاک ہو چکے ہیںاس دوران خاموشی اختیار کرنے پر ڈیموکریٹک پارٹی کی جانب سے تنقید کے بعد ڈونلڈ ٹرمپ نے ریاست کیلیفورنیا کا دوہ کیا جہاں انہوں نے آگ بجھانے والے عملے سے ملاقات کی۔ ایک صحافی نے ٹرمپ سے سوال کیا کہ کیا ماحولیاتی تبدیلی آگ لگنے کے واقعات کی وجہ ہے تو صدر ٹرمپ نے جواب دیا کہ میرا خیال ہے کہ یہ انتظامی معاملات کی وجہ سے ہے۔ بائیڈن کا کہنا ہے کہ اگر مزید 4 سال تک ٹرمپ ماحولیاتی تبدیلی کو نظر انداز کرتے رہے تو کتنے علاقے اس آگ سے تباہ ہو جائیں گے۔ اُدھر کیلی فورنیا اور اوریگون میں آگ بے قابو ہونے پر حکام نے انتباہ جاری کردیا ہے۔ 100 مقامات پر لگی آگ سے لاکھوں ایکڑ رقبہ تباہ ہو چکا ہے جس سے فضا کا معیار انتہائی خراب ہونے سے سانس کی بیماریاں پھیلنا شروع ہو گئی ہیں۔

 

وٹس ایپ کے ذریعے خبریں اپنے موبائل پر حاصل کرنے کے لیے کلک کریں

تمام خبریں اپنے ای میل میں حاصل کرنے کے لیے اپنا ای میل لکھیے

اپنا تبصرہ بھیجیں