نیب بدعنوانی کو جڑ سے اکھاڑ پھینکنے کے لئے پرعزم ہے، جاوید اقبال

اسلام آباد: جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال کا کہنا تھاکہ ملک سے بد عنوانی کا خاتمہ نیب کی اولین ترجیح ہے جبکہ  مفروروں اور اشتہاریوں کی گرفتاری کیلئے تمام وسائل بروئے کار لائے جا رہے ہیں۔

ذرائع ابلاغ کے مطابق قومی احتساب بیورو کے چیئرمین جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال کے زیر صدارت ایک اہم اجلاس ہوا جس میں مختلف ریفرنسس کے بارے میں تفصیلی تبادلہ خیالات کیا گیا۔

 

نیب اعلامیے کے مطابق  نیب منی لانڈرنگ، میگا کرپشن اور وائٹ کالر کرائمز کیسز میرٹ پر نمٹانے کیلئے پر عزم ہےاور نیب مفروروں اور اشتہاریوں کی گرفتاری کیلئے تمام وسائل بروئے کار لائے جا رہے ہیں جبکہ احتساب عدالتوں میں 1230 بدعنوانی کے ریفرنسز کی جلد سماعت کے لئے درخواستیں دائر کرنے کی ہدایت کردی ہے۔

چیئرمین نیب کا کہنا تھا کہ اربوں روپے کی کرپشن کرنے والوں کے خلاف قانون اپنا راستہ خود بنائے گا اور ملک سے بد عنوانی کا خاتمہ نیب کی اولین ترجیح ہے اور  بدعنوانی ایک کینسر ہے جس کا واحد حل سرجری ہے جبکہ میگا کرپشن کے وائٹ کالر کرائمز کو قانون کے مطابق نمٹانے کے لئے تمام ضروری ہدایات جاری کر دی ہیں۔

اجلاس کے بعد اعلامیہ کے مطابق چیئرمین نیب نے سی پیک منصوبوں کی نگرانی کے لئے چین کے ساتھ مفاہمت کی یادداشت پر دستخط کئے۔

جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال کا کہنا تھا کہ نیب کے مقدمات میں سزا کی شرح 86.8 فیصد ہے اور یہ ملک کے کسی بھی اینٹی کرپشن کے ادارے کے مقابلہ میں بہترین کارکردگی ہے جبکہ نیب نئے عزم واستقلال کے ساتھ بدعنوانی کو جڑ سے اکھاڑ پھینکنے کے لئے پرعزم ہے۔

وٹس ایپ کے ذریعے خبریں اپنے موبائل پر حاصل کرنے کے لیے کلک کریں

تمام خبریں اپنے ای میل میں حاصل کرنے کے لیے اپنا ای میل لکھیے

اپنا تبصرہ بھیجیں