ٹیلی گرام کے ذریعے خبریں اپنے موبائل پر حاصل کرنے کے لیے کلک کریں

القمرآن لائن کے ٹیلی گرام گروپ میں شامل ہوں اور تازہ ترین اپ ڈیٹس موبائل پر حاصل کریں

مسلمانوں کے بعد فلم انڈسٹری بھی مودی انتہاپسندی کا شکار، سیف علی خان کی فلم پر مقدمہ درج

ہندوستان کی فلم انڈسٹری بی جے پی کے زیر عتاب آگئی مودی سرکار کے شائننگ انڈیا کا اصل چہرہ سامنے آگیا۔
بی جے پی سرکار نے تن دیو نامی فلم کے خلاف مُودی حکومت نے ایف آئی آر کاٹ دی۔
مقدمے کے بعد فلم سازوں اور اداکاروں کو معافی مانگنے پر مجبور ہو نا پڑا۔
فلم تن دیو نیٹ فلکس پر جاری کی گئے ہے. فلم کے مرکزی کردار سیف علی خان اور ڈیمپل کپاڑیا تھے۔
انتہا پسندوں کی طرف سے الزام عائد کیا گیا ہے کہ اِس فلم میں ہندوؤں کے مذہبی جذبات مجروح کیے گئے ہیں.

درحقیقت فلم میں مقبوضہ کشمیر میں لگائے جانے والے آزادی کے نعروں سے مماثلت
اور کسان تحریک کے احتجاج کی طرز پر ڈائیلاگ اور خاکے شامل ہونے پرایف آئی آر کاٹی گئی۔
مودی سرکار نے فلم کے منتظمین کو غیر مشروط معافی مانگنے پر مجبور کردیا گیا۔

ایک ایسے ہی اور واقعے میں مزاحیہ ا داکار منو ر فاروقی کو ایک ناکردہ جُرم کے الزام میں گرفتار کر لیا گیا۔
منور فاروقی پر اندور، مدیحہ پردیش میں یکم جنوری 2021ء کو سٹیج ڈرامے میں ممکنہ ہندوؤں کے خلاف
ڈائیلاگ کے حوالے سے ایف آئی آر کاٹی گئی۔

یہ شو ابھی شروع بھی نہیں ہوا تھا کہ بی جے پی ممبر پارلیمنٹ کے بیٹے اکلاویہ کور کے سربراہی میں
مشتعل ہندوؤں نے منور فاروقی کو اغواء کر لیا۔
اکلاویہ کو ر ہندو راکھ شک سنگاتھن کے چیف ہیں۔

اس مشتعل ہجوم نے منور فاروقی کو پولیس کے حوالے کر دیا۔
پولیس نے اس اعتراف کے باوجود کہ منور فاروقی نے کوئی جُرم نہیں کیا۔
نہ صرف ایف آئی آر کاٹی گئی بلکہ18دِن اُسے حبسِ بے جا میں بھی رکھا گیا۔
اب ہندوستان کی عدالتوں کو منور فاروقی کو جیل بھیجنے کیلئے دَباؤ ڈالا جا رہا ہے۔
ہندوستان کا پولیس اور عدالتی نظام ہندوتوا پرچار میں نہ صرف پیش پیش ہے بلکہ پی جے پی کے مکمل قبضے میں ہے۔
اب یہاں سوال پیدا ہوتا ہے کہ کیا مذہبی جذبات صرف ہندوؤں کے ہیں؟
کیا ہندوستان صرف ہندوؤں کا ہے؟
گولڈن ٹیمپل ہو یا بابری مسجد، سکھوں کی مذہبی رسومات ہوں یا مسلمانوں کی مذہبی آزادی۔
برطانوی پارلیمنٹ بھی اس بات کا اعترف کرچکی ہے کہ بی جے پی نے تمام دیگر اقلیتوں کا گلہ دَبا دیا ہے۔

اب ہتدتوا نے بالی ووڈ کو بھی نشانے پر رکھ لیا ہے.
یہاں سوال یہ بھی پیدا ہوتا ہے کہکیا یہی بھارت کا اصل چہرہ ہے؟
وہ بھارت جو کبھی اپنے سافٹ امیج پر فخر کرتا تھا۔
آج بھارتی معاشرہ، رسم و رواج اور اب ثقافت بھی شدید خطرے میں ہے۔
میڈیا کے بعد اب ثقافت بھی مُودی حکومت کے زیرِ تسلط ہے۔

وٹس ایپ کے ذریعے خبریں اپنے موبائل پر حاصل کرنے کے لیے کلک کریں

تمام خبریں اپنے ای میل میں حاصل کرنے کے لیے اپنا ای میل لکھیے

اپنا تبصرہ بھیجیں