ٹیلی گرام کے ذریعے خبریں اپنے موبائل پر حاصل کرنے کے لیے کلک کریں

القمرآن لائن کے ٹیلی گرام گروپ میں شامل ہوں اور تازہ ترین اپ ڈیٹس موبائل پر حاصل کریں

پی ایس ایل2021: لاہور قلندرز نے کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کو 9 وکٹوں سے شکست دے دی

لاہور قلندرز نے فخر زمان اور محمد حفیظ کی شان دار بلے بازی کی بدولت پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) 2021 کے تیسرے میچ میں کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کی جانب سے دیا گیا 179 رنز کا ہدف باآسانی ایک وکٹ کے نقصان پر 19ویں اوور میں حاصل کیا اور میچ 9 وکٹوں سے جیت کر قیمتی پوائنٹس حاصل کرلیے۔

قبل ازیں پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) 2021 کے تیسرے میچ میں کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے کرس گیل کی پہلی نصف سنچری کی بدولت لاہور قلندرز کے خلاف پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے مقررہ اوورز میں 6 وکٹوں پر 178 رنز پر بنائے۔

نیشنل اسٹیڈیم کراچی میں کھیلے گئے پی ایس ایل2021 کے تیسرے روز لاہور قلندرز نے ٹاس جیت کر کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کو پہلے بیٹنگ کی دعوت دی۔

میچ میں لاہور قلندرز اور کوئٹہ گلیڈی ایٹرز رواں سیزن میں پہلی مرتبہ آمنے سامنے آئی تھیں۔

گلیڈی ایٹرز کی جانب سے ٹام بینٹن اور صائم ایوب نے اوپننگ کی اور محتاط رویہ اپنایا لیکن اپنی وکٹوں کو محفوظ نہیں رکھ پائے، دوسرے اوور میں بینٹن صرف 4 رنز بنا کر حارث رؤف کی گیند پر آؤٹ ہوئے۔

کرس گیل نے 68 رنز بنائے— فوٹو: پی ایس ایل

شاہین شاہ آفریدی نے تیسرے اوور میں صائم ایوب کو پویلین بھیج دیا جنہوں نے 3 رنز بنائے تھے، یوں 12 رنز پر ہی کوئٹہ گلیڈی ایٹرز دونوں اوپنرز سے محروم ہوگئی۔

لاہور قلندرز کے فیلڈر سلمان آغا نے ساتویں اوور میں کرس گیل کا ایک آسان کیچ گرا دیا اور انہیں موقع فراہم کیا اور دوسرے اینڈ سے سرفراز نے بھی اچھی بیٹنگ کی اور آٹھویں اوور میں ٹیم کی نصف سنچری مکمل کی۔

کرس گیل نے موقع کا بھرپور فائدہ اٹھاتے ہوئے جارحانہ انداز میں بیٹنگ کی۔

کرس گیل نے کھیل کے دوران کمینٹیٹرز کے ساتھ بات کرتے ہوئے مزاحیہ انداز میں گوگلی، گوگلی، گوگلی دہرایا۔

کرس گیل نے پی ایس ایل میں پہلی مرتبہ نصف سنچری مکمل کی جس کے لیے انہوں نے راشد خان کی گیند پر چھکا مارا، ان کی نصف سنچری میں 4 چوکے اور 4 چھکے شامل تھے۔

سرفراز احمد اورکرس گیل نے 101 رنز کی شراکت کی اور اس موقع پر کپتان کی اننگز 40 رنز پر حارث رؤف نے ختم کردی۔

کرس گیل نے 68 رنز بنائے— فوٹو: پی ایس ایل

راشد خان نے خطرناک انداز اپنائے ہوئے کرس گیل کی وکٹیں اڑا کر لاہور قلندرز کو سکون کا سانس فراہم کردیا، گیل 40 گیندوں پر 4 چوکوں اور 5 چھکوں کی مدد سے 68 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔

احمد دانیال نے گلیڈی ایٹرز کے اعظم خان کو شاہین شاہ آفریدی کے ہاتھوں کیچ کروایا اور پانچواں نقصان پہنچایا، وہ 9 گیندوں پر ایک چوکے کی مدد صرف 13 رنز بنا سکے۔

حارث رؤف نے اننگز کے آخری اوور کی دوسری گیند پر 5 رنز بنا کر کھیلنے والے بین کٹنگ کی وکٹیں اڑا دیں۔

کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے مقررہ اوورز میں 6 وکٹوں کے نقصان پر 178 رنز بنائے۔

محمد نواز نے اختتامی اوورز میں اچھی بیٹنگ کا مظاہرہ کیا اور 20 گیندوں پر 33 رنز بنائے اور انور علی نے ایک گیند کا سامنا کیا اور ایک رن بنا سکے۔

لاہور قلندرز کی جانب سے حارث رؤف نے سب سے زیادہ 3 وکٹیں حاصل کیں۔

ہدف کے تعاقب میں سہیل اختر اور فخر زمان نے محتاط بیٹنگ کی اور ساتویں اوور میں ٹیم کی نصف سنچری مکمل کی۔

کپتان سہیل اختر نے سست روی سے بیٹنگ کی اور 26 گیندوں پر 3 چوکوں کی مدد سے 21 رنز بنائے اور زاہد محمود نے ان کی وکٹیں اڑا دیں۔

دوسرے اینڈ سے فخر زمان نے ذمہ دارانہ بیٹنگ جاری رکھی اور ان کا ساتھ دینے کے لیے گزشتہ میچ میں اچھی بیٹنگ کا مظاہرہ کرنے والے محمد حفیظ میدان میں آئے۔

میچ کے 11ویں اوور میں فخر زمان نے زاہد محمود کی پہلی گیند پر چھکا مارا اور دوسری گیند پر ایک رن بنا کر اپنی نصف سنچری مکمل کی جو ان کی رواں سیزن میں پہلی نصف سنچری ہے۔

محمد حفیظ کا ایک کیچ بھی گرا دیا گیا تھا جس کا انہوں نے اس کا بھرپور فائدہ اٹھایا اور شان دار بیٹنگ کی اور 24 گیندوں میں اپنی تیز ترین نصف سنچری مکمل کی، جس میں 5 چھکے اور 2 چوکے شامل تھے۔

فخر زمان اور محمد حفیظ نے دوسری وکٹ میں ناقابل شکست شراکت میں شان دار بیٹنگ کا مظاہرہ کیا اور مطلوبہ ہدف 19ویں اوور کی دوسری گیند پر حاصل کرلیا۔

فخر زمان نے 52 گیندوں پر 8 چوکوں اور 2 چھکوں کی مدد سے 82 رنز بنائے اور محمد حفیظ نے محض 33 گیندوں کا سامنا کیا اور 6 چھکے اور 5 چوکوں کی مدد سے 73 رنز بنائے۔

فخر زمان کو شان دار کارکردگی پر میچ کا بہترین کھلاڑی قرار دیا گیا۔

خیال رہے کہ کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کو پہلے میچ میں کراچی کنگز سے شکست ہوئی تھی جبکہ لاہور قلندرز نے پشاور زلمی کو 4 وکٹوں سے شکست دے کر ٹورنامنٹ میں فاتحانہ آغاز کیا تھا۔

میچ کے لیے دونوں ٹیمیں ان کھلاڑیوں پر مشتمل تھیں۔

کوئٹہ گلیڈی ایٹرز: سرفراز احمد (کپتان)، کرس گیل، ٹام بینٹن، اعظم خان، صائم ایوب، بین کٹنگ، محمد نواز، زاہد محمود، انور علی، محمد حسنین، عثمان شنواری

لاہور قلندرز: سہیل اختر (کپتان)، فخر زمان، محمد حفیظ، سلمان علی آغا، بین ڈنک، سمت پٹیل، ڈیوڈ ویزے، راشد خان، احمد دانیال، شاہین شاہ آفریدی، حارث رؤف

منبع: ڈان نیوز

وٹس ایپ کے ذریعے خبریں اپنے موبائل پر حاصل کرنے کے لیے کلک کریں

تمام خبریں اپنے ای میل میں حاصل کرنے کے لیے اپنا ای میل لکھیے

اپنا تبصرہ بھیجیں