ٹیلی گرام کے ذریعے خبریں اپنے موبائل پر حاصل کرنے کے لیے کلک کریں

القمرآن لائن کے ٹیلی گرام گروپ میں شامل ہوں اور تازہ ترین اپ ڈیٹس موبائل پر حاصل کریں

طالبان حکومت تسلیم کا فیصلہ نہیں کیا ،وعدوں کا جائزہ لے رہے ہیں،پاکستان

واشنگٹن،کابل ( آن لائن، اے پی پی )امریکا میں تعینات پاکستانی سفیر ڈاکٹر اسد مجید خان نے کہا ہے کہ پاکستان نے طالبان کی حکومت کو ابھی تک تسلیم نہیں کیا ہے ،پاکستان اور امریکا افغانستان میں امن چاہتے ہیں،اب وقت آگیا ہے کہ ہم ماضی سے سبق سیکھیں، پاکستانی سفیر نے امریکی اخبار کوانٹرویو میں کہا کہ میری ہمدردی نائن الیون کے متاثرین اور ان کے لواحقین کے ساتھ ہے، پاکستان نے بھی دہشت گردی کے خلاف جنگ کی بھاری قیمت ادا کی ہے۔افغانستان میں ایک حکومت موجود ہے، عالمی برادری چاہے تو اس سے بات کرے یا تنہا چھوڑ دے، ہم نے طالبان حکومت کو ابھی تک تسلیم نہیں کیا، ہم یہ دیکھ رہے ہیں کہ افغانستان میں نئی حکومت بین الاقوامی برادری کی توقعات کوکس حد تک پورا کررہی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ پاک امریکا تعلقات کو کسی تیسرے ملک کے تناظر میں نہیں دیکھا جانا چاہیے، خواہ وہ افغانستان ،بھارت یا چین ہو۔ پاک امریکاتعلقات کی ایک تاریخ ہے، امریکا پاکستان کے لیے سب سے بڑا برآمدی مقام ہے اور ترسیلات زر کا ہمارا تیسرا سب سے بڑا ذریعہ ہے۔ پاکستان نے بھی دہشت گردی کے خلاف جنگ کی بھاری قیمت ادا کی ہے، ہماری 80 ہزار شہادتیں ہوئیں اور 150 بلین ڈالرز سے زائد کا مالی نقصان اٹھانا پڑا۔بین الاقوامی برادری کو چاہییکہ وہ حقائق کو زیادہ گہرائی سے دیکھیں دہشت گردی کے خلاف ہماری قربانیاں اور کوششیں لازوال ہیں۔دریں اثناء کابل میں پاکستان کے سفیر منصور احمد خان نے افغانستان کے نئے وزیرخارجہ امیر خان متقی سے ملاقات کی اور دو طرفہ تعاون کو مضبوط بنانے پر تبادلہ خیال کیا۔ منصور احمد خان کی طرف سے منگل کو جاری ٹویٹ میں کہا گیا ہے کہ ملاقات میں بالخصوص انسانی ہمدردی، معیشت اور عوامی سطح پر تبادلوں میں سہولت کے ساتھ دو طرفہ تعاون کو مزید مستحکم بنانے پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

وٹس ایپ کے ذریعے خبریں اپنے موبائل پر حاصل کرنے کے لیے کلک کریں

تمام خبریں اپنے ای میل میں حاصل کرنے کے لیے اپنا ای میل لکھیے

اپنا تبصرہ بھیجیں