پاکستانی فضائی حدود استعمال کرنے کے معاہدے کے قریب ہیں ، امریکا ، پاکستان کی تردید

واشنگٹن‘اسلام آباد(صباح نیوز)افغانستان میں فوجی آپریشن کے لیے فضائی حدود کے استعمال پر امریکا اور پاکستان معاہدے کے قریب پہنچ گئے ہیں تاہم ابھی تک معاہدے کی شرائط طے نہیں پائیں ۔اس بات کا دعویٰ امریکا کے سرکاری نشریاتی ادارے سی این این نے اپنی ایک رپورٹ میں کیا ہے جب کہ دفترخارجہ نے پاکستان اور امریکا کے درمیان افغانستان میں فوجی آپریشن کے لیے پاکستانی فضائی حدود کے استعمال سے متعلق معاہدے کے بارے میں خبروں کی تردید کر دی ہے ۔سی این این کی ایک رپورٹ کے مطابق جوبائیڈن انتظامیہ نے امریکی ارکان کانگریس کو پاکستان کے ساتھ ہونے والے سمجھوتے سے آگاہ کر دیاہے۔ جوبائیڈن انتظامیہ نے ارکان کو بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ پاکستان کے ساتھ معاہدے کا جلد امکان ہے۔رپورٹ میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ پاکستان2شرائط پر ایم او یو سائن کرنے کے لیے رضا مند ہے،پاکستان کی طرف سے انسداد دہشت گردی کی کاوشوں اور بھارت سے تعلقات میں بہتری کی مدد کی شرائط بھی
شامل ہیں ۔سی این این کے ذرائع کے مطابق امریکا سے پاکستان کے مذاکرات جاری ہیں، سمجھوتے کو حتمی شکل نہیں دی گئی اور اس میں تبدیلی بھی ہوسکتی ہے۔رپورٹ کے مطابق اس معاہدے پر امریکی عہدیدار ان کے حالیہ دورہ پاکستان کے دوران غور ہواتاہم ابھی تک یہ واضح نہیں ہوسکا کہ پاکستان اس معاہدے کے بدلے کیا چاہتا ہے اور امریکا جواب میں کتنا کچھ دینے کے لیے تیار ہے ۔امریکی محکمہ دفاع پینٹاگو ن سے جب اس بارے میں امریکی نشریاتی ادارے نے رابطہ کیا تو انہوں نے اس پر تبصرہ کرنے سے انکار کردیا۔ادھرترجمان دفتر خارجہ نے ایک بیان میں پاکستان اور امریکا کے مابین معاہدے کو باقاعدہ شکل دینے کے حوالے سے خبروں کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان اور امریکا کے مابین ایسے کسی معاہدے پر بات چیت نہیں ہو رہی ہے۔ترجمان نے کہاکہ پاکستان اور امریکا کا علاقائی سلامتی اور انسداد دہشت گردی پر دیرینہ تعاون ہے، پاکستان اور امریکا میں باقاعدہ مشاورت جاری ہے۔

وٹس ایپ کے ذریعے خبریں اپنے موبائل پر حاصل کرنے کے لیے کلک کریں

ٹیلی گرام کے ذریعے خبریں اپنے موبائل پر حاصل کرنے کے لیے کلک کریں

القمرآن لائن کے ٹیلی گرام گروپ میں شامل ہوں اور تازہ ترین اپ ڈیٹس موبائل پر حاصل کریں

تمام خبریں اپنے ای میل میں حاصل کرنے کے لیے اپنا ای میل لکھیے

اپنا تبصرہ بھیجیں