حامد میر کی تحریک انصاف اور سمیع ابراہیم کی ن لیگ کے خلاف ٹوئیٹ

پاکستان کے بیشتر اینکر اور صحافی واضع طور پر سیاسی جماعتوں کے ایجنڈے پر کام کررہے ہیں۔ باالخصوص نیوز چینلز
پر نیوز شوز کرنے والوں اپنی اپنی لائن پکڑ لی ہیں۔ اب تو تجزیہ کار بھی اینکرز سے آگے نکل چکے ہیں۔

سیاسی جماعتوں سے روزانہ کی بنیاد پر لائنز لے کر اسے سوشل میڈیا اور نیوز شوز میں آگے بڑھاتے ہیں۔
جیو نیوز کے اینکر حامد میر نے ڈاکٹر دانش کی تحریک انصاف کے سابق وزیر مملکت فرخ حبیب کی ضمنی انتخابات میں
دھاندلی کے لیکچر کی ویڈیو ری ٹوئیٹ کی ہے۔

اسی طرح بول نیوز کے سمیع ابراہیم کو پہلے پیپلز پارٹی کی لائن لیا کرتے تھے اب کچھ عرصے سے تحریک انصاف کے نظریہ
کو آگے بڑھا رہے ہیں۔ اسی لیے انہوں نے مسلم لیگ ن کی ویڈیو شئیر کی ہے۔

صحافی اور اینکرز کی وقت سے ساتھ بدلتی لائنز کی وجہ سے عوام بھی ان پر اب اعتماد نہیں کرتے۔ حق بات کرنے کے بجائے
مخصوص جماعت کی لائنز آگے بڑھانے کی وجہ سے ان کے فالورز بھی اسی جماعت ہی کے زیادہ لوگ ہوتے ہیں۔

کیا صحافیوں کی بھی سیاسی جماعت ہے؟

ناقدین کا کہنا ہے کہ اینکرز نیوز شوز میں مخالف نظریات والے مہمانوں کو بولنے کا موقع بھی کم دیتے ہیں۔ اس لیے وہ بھی
خود کو سیاسی لیڈر سمجھنے لگے ہیں۔

وٹس ایپ کے ذریعے خبریں اپنے موبائل پر حاصل کرنے کے لیے کلک کریں

ٹیلی گرام کے ذریعے خبریں اپنے موبائل پر حاصل کرنے کے لیے کلک کریں

القمرآن لائن کے ٹیلی گرام گروپ میں شامل ہوں اور تازہ ترین اپ ڈیٹس موبائل پر حاصل کریں

تمام خبریں اپنے ای میل میں حاصل کرنے کے لیے اپنا ای میل لکھیے

اپنا تبصرہ بھیجیں