ٹیلی گرام کے ذریعے خبریں اپنے موبائل پر حاصل کرنے کے لیے کلک کریں

القمرآن لائن کے ٹیلی گرام گروپ میں شامل ہوں اور تازہ ترین اپ ڈیٹس موبائل پر حاصل کریں

ورلڈ کپ فائنل کا تاج کس کے سر سجے گا فیصلہ آج ہوگا

احمد آباد: ورلڈ کپ فائنل کا تاج کس کے سر سجے گا آسٹریلیا  کپ جیتنے کےلیے پرجوش نظر آرہی ہے جبکہ انڈیا نے ابھی تک ناقابل شکست کھیل پیش کرنے کے بعد اب فائنل جیتنے کے لیے میدان میں اترے گی جس کا فیصلہ آج  گا ۔

ہندوستان کرکٹ کے دیوانے ملک اور اس سے آگے کے اربوں شائقین کی امیدوں کو لے کر جائے گا جب احمد آباد میں اتوار کو ہونے والے ورلڈ کپ فائنل میں ناقابل شکست میزبان آسٹریلیا کا مقابلہ ہوگا۔

1لاکھ 30 ہزار  گنجائش والے نریندر مودی اسٹیڈیم میں ایک شو پیس میچ  جس کا نام ہندوستانی وزیر اعظم کے نام پر رکھا گیا ہے، جن کی اس کھیل میں شرکت کی توقع ہے میں ہندوستانی فضائیہ کی طرف سے میچ سے پہلے کا فلائی پاسٹ بھی پیش کیا جائے گا اور ساتھ ہی ساتھ کوریوگرافڈ ڈسپلے بھی ہوں گے جس میں درجنوں اننگز کے وقفے کے دوران رقاص اور لائٹ شو پیش کیا جائے گا ۔

ہر چیز مناسب طور پر بڑے پیمانے پر ہونے کا وعدہ کرتی ہے کیونکہ ہندوستان کھیل کا معاشی پاور ہاؤس ہے۔ لیکن کرکٹ بھی اس موقع پر اچھی طرح سے رہ سکتی ہے۔

ہندوستان نے ٹورنامنٹ کے اختتام پر اپنے راستے میں لگاتار 10 گیمز جیتے ہیں کیونکہ وہ لارڈز میں 1983 کے فائنل میں ویسٹ انڈیز کے خلاف شاندار فتح اور سری کے خلاف فتح کے ساتھ 2011 کی ہوم فتح کے بعد تیسرا ورلڈ کپ ٹائٹل جیتنے کی کوشش کر رہے ہیں۔

ویرات کوہلی 711 رنز کے ساتھ ٹورنامنٹ کے سرکردہ بلے باز کے طور پر کھیل میں داخل ہوئے اور ممبئی میں نیوزی لینڈ کے خلاف سیمی فائنل میں 70 رنز سے جیت کر 50 ون ڈے سنچریوں کا نیا ریکارڈ قائم کیا۔

اس اننگز میں اسٹار بلے باز نے 49 ون ڈے سنچریوں کا نشان توڑ دیا جو اس نے ہندوستان کے ریٹائرڈ عظیم سچن ٹنڈولکر کے ساتھ شیئر کیا تھا – جو کوہلی کے بچپن کے ہیرو تھے اس سے پہلے کہ یہ دونوں ہندوستان کی 2011 کی فاتح ٹیم میں شامل تھے۔

محمد شامی، اس دوران، صرف 9.13 کی اوسط سے 23 وکٹوں کے ساتھ ٹورنامنٹ کے باؤلنگ چارٹ میں سرفہرست ہیں، ہاردک پانڈیا کے زخمی ہونے سے پہلے پہلے چار کھیلوں کے لیے ٹیم سے باہر رہنے کے باوجود اس تیز گیند باز کی ڈرامائی واپسی کی راہ ہموار ہوئی۔

وٹس ایپ کے ذریعے خبریں اپنے موبائل پر حاصل کرنے کے لیے کلک کریں

تمام خبریں اپنے ای میل میں حاصل کرنے کے لیے اپنا ای میل لکھیے

اپنا تبصرہ بھیجیں