ٹیلی گرام کے ذریعے خبریں اپنے موبائل پر حاصل کرنے کے لیے کلک کریں

القمرآن لائن کے ٹیلی گرام گروپ میں شامل ہوں اور تازہ ترین اپ ڈیٹس موبائل پر حاصل کریں

سنی اتحاد کونسل کی مخصوص نشستوں سے متعلق کیس کا فیصلہ محفوظ

اسلام آباد: سپریم کورٹ آف پاکستان نے الیکشن کمیشن آف پاکستان کے پشاور ہائی کورٹ کے فیصلے کے خلاف سنی اتحاد کونسل کی درخواست پر فیصلہ محفوظ کر لیا ہے جس میں الیکشن کمیشن آف پاکستان کی جانب سے مخصوص نشستوں سے انکار کے فیصلے کو برقرار رکھا گیا ہے۔

عدالتی ذرائع کے مطابق فیصلہ آج نہیں سنایا جائے گا۔

اس سے قبل کیس کی سماعت چیف جسٹس آف پاکستان قاضی فائز عیسیٰ کی سربراہی میں 13 رکنی فل کورٹ بنچ نے کی۔

بنچ میں جسٹس سید منصور علی شاہ، جسٹس منیب اختر، جسٹس یحییٰ آفریدی، جسٹس امین الدین خان، جسٹس جمال خان مندوخیل، جسٹس محمد علی مظہر، جسٹس اطہر من اللہ، جسٹس سید حسن اظہر رضوی، جسٹس عائشہ ملک اور جسٹس ریٹائرڈ شامل تھے۔ شاہد وحید، جسٹس عرفان سعادت خان اور جسٹس نعیم اختر افغان شامل تھے۔

مخصوص نشستوں کا معاملہ 8 فروری کے انتخابات میں پی ٹی آئی کے حمایت یافتہ آزاد امیدواروں کے جیتنے کے بعد سامنے آیا اور بعد میں اقلیتوں اور خواتین کے لیے مخصوص نشستوں کا دعویٰ کرنے کے لیے ایس آئی سی میں شمولیت اختیار کی تھی۔

تاہم، پی ٹی آئی کو اس وقت دھچکا لگا جب ای سی پی نے اپنے امیدواروں کی فہرست جمع کرانے میں پارٹی کی ناکامی کا حوالہ دیتے ہوئے، ایس آئی سی کو مخصوص نشستیں مختص کرنے سے انکار کردیا۔

اس کے بعد پی ٹی آئی نے پی ایچ سی سے رجوع کیا جس نے اس معاملے پر ای سی پی کے فیصلے کو برقرار رکھا۔

اس کے بعد، ایس آئی سی نے پی ایچ سی کے فیصلے اور اسمبلیوں میں 67 خواتین اور 11 اقلیتی نشستوں کی الاٹمنٹ کو ایک طرف رکھنے کی کوشش کرتے ہوئے سپریم کورٹ کو رجوع کیا تھا ۔

وٹس ایپ کے ذریعے خبریں اپنے موبائل پر حاصل کرنے کے لیے کلک کریں

تمام خبریں اپنے ای میل میں حاصل کرنے کے لیے اپنا ای میل لکھیے

اپنا تبصرہ بھیجیں