ٹیلی گرام کے ذریعے خبریں اپنے موبائل پر حاصل کرنے کے لیے کلک کریں

القمرآن لائن کے ٹیلی گرام گروپ میں شامل ہوں اور تازہ ترین اپ ڈیٹس موبائل پر حاصل کریں

فیفا اور اے ایف سی پاکستان میں جاری فٹبال کے معاملات سے مطمئن ہیں، ہارون ملک

 کراچی:پاکستان فٹبال فیڈریشن نائرملائزیشن کمیٹی(این سی)کے چیئرمین ہارون ملک نے کہا ہے فیفا اور ایشین فٹبال کنفیڈریشن(اے ایف سی)پاکستان میں جاری فٹ بال کے معاملات سے مطمئن ہیں۔

نیشنل چیلنج کپ کی افتتاحی تقریب کے موقع پر صحافیوں سےگفتگو کرتے ہوئے ہارون ملک کا کہنا تھا کہ پہلے فٹبال شروع کرائیں اس کے بعد انتخابات کرائیں، ہمیں گزشتہ کئی سالوں کے کام کرنا پڑ رہے ہیں اور جب تک کورٹ کیسز ختم نہیں ہوجاتے ہم پاکستان فٹ بال فیڈریشن کے انتخابات کا کوئی شیڈول نہیں دے سکتے۔

انہوں نے کہا کہ این سی کے خلاف احتجاج کرنے والے صبر کریں، ہم صاف اور شفاف انتخابات کرکے انہیں ایک اچھا سسٹم دیکر جائیں گے،دو سال کے بعد نیشنل چینلج کپ کا آغاز ہوا ہے، کھلاڑی ، کوچز، فٹ بال منتظمین موجودہ سیٹ اپ سے مطمئن ہیں ،مینز اور ویمنز کی ٹیمیں مستقبل میں کئی ایونٹس میں شرکت کررہی ہیں جنہیں شیڈول کرلیا گیا ہے۔

انہوں نے کہاکہ دو سال کے بعد نیشنل چینلج کپ کا آغاز ہوا ہے، کھلاڑی ، کوچز، منتظمین خوش ہیں۔این سی کی کارکرگی پر پروٹیسٹ کرنے والے انتظار کریں کئی سالوں کا گند صاف کر رہے ہیں اگر سارے کام وقت پر ہوجاتے تو ہم بہت پہلے الیکشن کرا کے جاچکے ہوتے، کورٹ کیسز جب تک ختم نہیں ہوں گے پاکستان فٹ بال فیڈریشن کے انتخابات کا شیڈول نہیں دے سکتے۔

انہوں نے کہا کہ فیفا اور اے ایف سی کا وفد گزشتہ دنوں پاکستان کے دورے پر تھا ، انہوں نے ہمارے پی ایف ایف کے انتخابات کے حوالے سے فری اینڈ فیئر کام پر مکمل اعتماد اور اطمینان کا اظہار کیا، انہوں نے ہماری فٹبال گرانڈ آباد کرنے کی کوشش کو بے حد سراہا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ چیلنج کپ مختلف گراﺅنڈز پر کھیلا جا رہا ہے جہاں شہزاد انور کے علاوہ بھی کوچز کھلاڑیوں کی کارکردگی کو مانیٹر کررہے ہیں، یہ ایونٹ ہوم اینڈ اوے کی بنیاد پر ہورہا ہے۔

آٹھ سال بعد خواتین ٹیم نے سعودی عرب میں جس کارکردگی کا مظاہرہ کیا وہ سب کے سامنے ہے،میں اس پر مبارک باد پیش کرتا ہوں، اگر ہمارے فارن کھلاڑیوں کو پاسپورٹ وقت پر مل جاتے تو ہم پہلی پوزیشن حاصل کرلیتے۔

وٹس ایپ کے ذریعے خبریں اپنے موبائل پر حاصل کرنے کے لیے کلک کریں

تمام خبریں اپنے ای میل میں حاصل کرنے کے لیے اپنا ای میل لکھیے

اپنا تبصرہ بھیجیں