کراچی کے 18 سرکاری اسکولز و کالجز کے نتائج صفر بھٹو خاندان کے نام کے کالجز بھی شامل

وزیر تعلیم کے نہ ہونے، اساتذہ کی کمی کے باعث سندھ کے کالجوں میں تدریس بری طرح متاثر ہوئی
بھٹو خاندان کے نام پر قائم کالجوں کے انٹر کامرس اور سائنس کے نتائج میں کوئی طلبہ کامیاب نہیں ہوسکا
کراچی ( اسٹاف رپورٹر ) وزیر تعلیم کے نہ ہونے، اساتذہ کی کمی اور انھیں سپریم کورٹ کے فیصلے کے برخلاف ڈیپوٹیشن پر دوسرے محکموں میں بھیجے جانے کے باعث سندھ کے کالجوں میں تدریس بری طرح متاثر ہوئی ہے جس کا اندازہ اس بات سے لگایا جاسکتا ہے کہ کراچی میں انٹرمیڈیٹ آرٹس ریگولر کے امتحانات میں 18سرکاری کالجز و ہائر سیکنڈری اسکولز کے نتائج صفر فیصد رہے جہاں کوئی طالبعلم بھی کامیاب نہیں ہوسکا۔ ان کالجوں میں دو کالج بھٹو خاندان کے نام کے بھی شامل ہیں جن کے نتائج صفر رہے ان میں نصرت بھٹو گورنمنٹ ڈگری بوائز کالج لیاری اور شہید بینظیر بھٹو گورنمنٹ گرلز ڈگری کالج لیاری شامل ہیں جبکہ شہید ذوالفقار علی بھٹو، گورنمنٹ بوائز ڈگری کالج کے نتائج 12فیصد اور دختر مشرق گورنمنٹ ڈگری کالج کے نتائج 14 فیصد رہے۔ بھٹو خاندان کے نام پر قائم ان کالجوں کے انٹر کامرس اور سائنس کے نتائج بھی مایوس کن رہے تھے جن دیگر سرکاری کالجز و ہائر سیکنڈری اسکولز کے نتائج صفر فیصد رہے، اِن میں گورنمنٹ ڈگری بوائز کالج قائد آباد، گورنمنٹ ڈگری بوائز کالج ابراہیم حیدری،گورنمنٹ علامہ اقبال ڈگری کالج ایوننگ ، جامعہ ملیہ گورنمٹ کالج مارننگ ، جامعہ ملیہ گورنمنٹ کالج ملیر ایوننگ ، گورنمنٹ سٹی کالج مارننگ ، لیاقت گورنمنٹ کالج جنگل شاہ کیماڑی، ایس ایم گورنمنٹ آرٹس اینڈ کامرس کالج ایوننگ، گورنمنٹ گرلز ڈگری سائنس آرٹس کالج اورنگی ٹائون سیکٹر ساڑھے۔11جبکہ ہائرسیکنڈری اسکولوں کی کارکردگی بھی کچھ مختلف نہیں ہے۔ ان میں سی ایم ایس گورنمنٹ ہائر سیکنڈری کیمپس اسکول بوائز اینڈ گرلز نشتر روڈ ، این جے وی گورنمنٹ بوائز ہائر سیکنڈری اسکول سندھی میڈیم، گورنمنٹ گرلز ہائر سیکنڈری اسکول کونکر ولیج گڈاپ، علامہ اقبال گورنمنٹ بوائز ہائر سیکنڈری اسکول سہراب گوٹھ ، دستگیر گورنمنٹ گرلز ہائر سیکنڈری اسکول ایف بی ایریا شامل ہیں۔

وٹس ایپ کے ذریعے خبریں اپنے موبائل پر حاصل کرنے کے لیے کلک کریں

ٹیلی گرام کے ذریعے خبریں اپنے موبائل پر حاصل کرنے کے لیے کلک کریں

القمرآن لائن کے ٹیلی گرام گروپ میں شامل ہوں اور تازہ ترین اپ ڈیٹس موبائل پر حاصل کریں

تمام خبریں اپنے ای میل میں حاصل کرنے کے لیے اپنا ای میل لکھیے

اپنا تبصرہ بھیجیں