ٹیلی گرام کے ذریعے خبریں اپنے موبائل پر حاصل کرنے کے لیے کلک کریں

القمرآن لائن کے ٹیلی گرام گروپ میں شامل ہوں اور تازہ ترین اپ ڈیٹس موبائل پر حاصل کریں

بھارتی ریاست گجرات کے ہندو مسلم فسادات،22 ملزمان باعزت بری ہو گئے

بھارتی ریاست گجرات کی عدالت نے سترہ مسلمانوں کے قتل بائیس ملزمان کو ٹھوس شواہد نہ ہونے کی بنا پر رہا کر دیا گیا ۔

 وکیل استغاثہ گوپال سولانکی  نے پریس کو بتایا کہ ان ملزمان کو دلائل ناکافی ہونے کی بنا پر با عزت بری کیا گیا ہے۔

 یاد رہے کہ ریاست گجرات میں سال 2022 کے دوران گودھرا اسٹیشن کے قریب ایک ٹرین میں لگی آگ سے ساٹھ ہندو یاتری جل کر ہلاک ہو گئے تھے جس کے بعدریاست  بھر میں ہندو مسلم فساد شروع ہو گیا تھا۔

بھارتی جتھوں نے آگ لگنے کے اس واقعے کی ذمہ داری مسلمانوں پر ڈال کر ریاست بھر میں مسلم علاقوں اور دیہاتوں پر حملے کیے جن میں ایک ہزار افراد ہلاک جبکہ سینکڑوں خواتین کی عصمت دری کی گئی تھی ۔

موجودہ وزیراعظم نریندرہ مودی اس وقت ریاست کے وزیر اعلی تھے جن پر الزام تھا کہ انہوں نے ان فسادات پر چشم پوشی اختیار کر رکھی تھی ۔

وٹس ایپ کے ذریعے خبریں اپنے موبائل پر حاصل کرنے کے لیے کلک کریں

تمام خبریں اپنے ای میل میں حاصل کرنے کے لیے اپنا ای میل لکھیے

اپنا تبصرہ بھیجیں