جنوبی کوریا: نیلے پیلس کو 74 سال کے بعد عوام کے لئے کھول دیا گیا

جنوبی کوریا میں صدر کی سرکاری اقامت گاہ  یعنی "نیلے پیلس”  کو 74 سال کے بعد عوام کے لئے کھول دیا گیا ہے۔

عام زیارت کے لئے کھُلنے کے بعد ہزاروں کی تعداد میں عوامی زائرین نے پیلس کا رُخ کیا۔

جاپان میں نئے صدر یون سک ۔ییول  نے عہدہ  صدارت سنبھالنے کے بعد  سب سے پہلے صدارتی دفاتر کو منتقل کرنے اور نیلے پیلس کو عوام کے لئے کھولنے کا حکم دیا ہے۔

اطلاع کے مطابق یومیہ تقریباً 39 ہزار افراد محل کی سیر کے لئے آ رہے ہیں۔

نیلے پیلس کو عوام کے لئے کھولنا صدر یون کے انتخابی مہم  کے وعدوں میں سے ایک تھا۔ صدارتی آفس  پیلس سے نکلنے کے بعد 5 کلومیٹر کے فاصلے پر وزارت دفاع کی عمارت میں منتقل ہو گیا ہے۔

یون نے کہا ہے کہ وہ امریکہ کے وائٹ ہاوس سے مشابہہ  صدارتی پیلس کی تعمیر کا ہدف رکھتے ہیں۔ متوقع نئے صدارتی دفاتر سے عوام سے زیادہ بہتر رابطہ قائم کیا جا سکے گا۔

تاہم یون کے اس منصوبے کو غیر حقیقی اور جلدی کا منصوبہ قرار دے کر تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔

واضح رہے کہ نیلے پیلس کو یون کے صدارتی فرائض کے آغاز کے پہلے دن یعنی 10 مئی کو عوام کے لئے کھول دیا گیا تھا۔

وٹس ایپ کے ذریعے خبریں اپنے موبائل پر حاصل کرنے کے لیے کلک کریں

ٹیلی گرام کے ذریعے خبریں اپنے موبائل پر حاصل کرنے کے لیے کلک کریں

القمرآن لائن کے ٹیلی گرام گروپ میں شامل ہوں اور تازہ ترین اپ ڈیٹس موبائل پر حاصل کریں

تمام خبریں اپنے ای میل میں حاصل کرنے کے لیے اپنا ای میل لکھیے

اپنا تبصرہ بھیجیں