دونباس اور دیگر یوکیرینی علاقوں میں شہریوں کی ہلاکتوں کا ذمہ دار مغرب ہے، سرگئی لاوروف

روسی وزیر خارجہ سرگئی لاوروف  نے یورپ کو  یوکیرین کے دونباس اور دیگر علاقوں میں شہریوں کی اموات کا ذمہ دار ٹہرایا ہے۔

ویتنام کے دارالحکومت ہنوئی کا دورہ کرتے ہوئے سرگئی لاوروف نے ویتنام کے وزیر خارجہ بوئی تھانہ سون سے ملاقات کے بعد صحافیوں کے سوالات کے جوابات دیئے۔

یوکرین کی جنگ کی وجہ سے مغربی ممالک کی جانب سے روس پر پابندیاں عائد کرنے کی طرف اشارہ کرتے ہوئے لاوروف نے کہا کہ ویتنام نے مذکورہ پابندیوں میں حصہ نہیں لیا  جس کو ہم  قدر کی نگاہ سے دیکھتے ہیں۔

روس کے بیلگورود اور کُرسک شہروں پر حملوں کے معاملے کو ذکر کرتے ہوئے لاوروف نے "روسی فوج نے مغربی ممالک کی طرف سے یوکرین کو ہتھیاروں کی ترسیل روکنے کے لیے اپنے ہی شہروں کو نشانہ بنایا” پر مبنی یوکرینی انتظامیہ کے بیانات کا جائزہ پیش کرتے ہوئے کہا کہ یہ  جھوٹ بول رہے ہیں۔  روسی وزارت دفاع روزانہ  کی بنیاد پر  جنگی حقائق  سے آگاہی کراتی  ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ مغربی ممالک کو یہ سمجھ لینا چاہیے کہ  یہ ” خاص طور پر دونباس اور یوکرین کے دیگر حصوں میں عام شہریوں کی ہلاکتوں کا ذمہ دار  ہے، ۔ کیف انتظامیہ مغرب کی طرف سے فراہم کردہ ہتھیاروں کو یہاں کی شہری آبادی کے خلاف ڈرانے دھمکانے کے لیے استعمال کرتی ہے۔  جو کہ  ایک طرح کی  ریاستی دہشت گردی ہے۔ "

وٹس ایپ کے ذریعے خبریں اپنے موبائل پر حاصل کرنے کے لیے کلک کریں

ٹیلی گرام کے ذریعے خبریں اپنے موبائل پر حاصل کرنے کے لیے کلک کریں

القمرآن لائن کے ٹیلی گرام گروپ میں شامل ہوں اور تازہ ترین اپ ڈیٹس موبائل پر حاصل کریں

تمام خبریں اپنے ای میل میں حاصل کرنے کے لیے اپنا ای میل لکھیے

اپنا تبصرہ بھیجیں